کراچی میں 15 کروڑ روپے کے جعلی اور غیر قانونی سگریٹ نذر آتش

تحریر: None

| شائع |

چرس ہیروئن افیون شراب پکڑی جانے پر جلا دی جاتی ہے یا تلف کر دی جاتی ہے۔ سگریٹ جعلی پکڑے جائیں ان کو نذرآتش کر دیا جائے، یہ پہلی مرتبہ سنا ہے۔ ہو سکتا ہے کہ یہ بھرے ہوئے سگریٹ ہوں۔ جعلی سگریٹ کیسے بنے ہوں گے ؟ تمباکو کی بجائے کس چیز کا برادہ کاغذ میں لپیٹ دیا گیا ہوگا۔ یہ برادہ ہوگا یا بارود ہوگا اور پھر غیر قانونی سگریٹ کیسے بنتے ہیں۔ ہو سکتا ہے کہ بڑے برانڈ کی نقل کر لی جاتی ہو۔

جعلی اور غیر قانونی سگریٹوں کے لیے کاغذ کی بجائے سستے ٹشو استعمال کیے جاتے ہیں؟ یقین

ی طور پر جعلی اور غیر قانونی سگریٹ ہر لحاظ سے غیر معیاری ہی ہوتے ہیں ۔اس کے دھوئیں سے مرغولے بھی نہیں بنتے ہوں گے۔ کش لے کر سگریٹ نوش دھواں منہ اور ناک سے نکالتا ہے جو سگریٹ غیر قانونی اور جعلی ثابت ہوئے ہیں ۔اس کا سوٹا لگانے سے کیا دھواں کانوں سے نکلتا ہے۔ایک دوست نے دوسرے سے کہا یار تو 10 سال سے سگریٹ نوشی کر رہا ہے۔ روزانہ ایک ڈبی بھی پئے تو اب تک تو پانچ لاکھ روپے پھونک چکا ہے۔نصیحت کرنے والے دوست سے دوسرے  دوست نے اگلے دن اس کے گھر جا کر 10 ہزار روپے ادھار مانگے تو اس نے کہا میرے پاس کہاں سے 10 ہزار روپے آئے ۔جس پر ادھار مانگ لینے والے نے کہا کہ یارتو نے جو سیگرٹ نہ پی کر پانچ لاکھ روپے بچائے تھے ان میں سے مجھے صرف 10 ہزار روپے دے دو۔