دو سر والی شارکس کی تعداد میں اضافے نے تہلکہ مچادیا

2016 ,نومبر 7



پیرس (مانیٹرنگ ڈیسک): غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق اسپین کی یونیورسٹی آف مالاگا کے پروفیسر ویلنٹین سانز کوما دو سر والی شارکس میں اضافے پر تحقیق کررہے ہیں، انہوں نے پیدائش سے قبل 800 کے قریب شارک پر تحقیق کے بعد بتایا کہ دو سر والی شارکس میں اضافے کی وجہ جینیاتی خرابی کے علاوہ اور کوئی نہیں ہوسکتی.وہ کہتے ہیں کہ لیبارٹری ٹیسٹ میں پیدائش سے قبل کسی بھی قسم کا کوئی انفیکشن، کیمیکل ری ایکشن یا تابکاری اثر نہیں پایا گیا۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ 2 سر والی شارکس کی تعداد میں اضافے کے کئی محرکات ہوسکتے ہیں، جن میں انفیکشن اور ماحولیاتی آلودگی شامل ہیں۔ایک سائنسدان نکولس نے کہا کہ 2 سر والی شارکس کی تعداد میں اضافہ مچھلیوں کے زیادہ شکار کے باعث ہورہا ہے، مچھلیوں میں جینیاتی خامی کے باعث دو سر ایک عام سی بات ہے۔سائنسدان اس بات پر بھی تحقیق کررہے ہیں کہ دو سر والی شارکس عام طور پر زیادہ عرصہ زندہ نہیں رہ پاتیں۔

متعلقہ خبریں