فحش فلموں کی اداکارہ نے ایسی بات کہہ دی کہ دنیا بھر کے مسلمان اور عیسائی دونوں کو غصہ چڑھادیا، سوشل میڈیا پر تہلکہ برپا ہوگیا

2017 ,اپریل 28



برازیلیا (مانیٹرنگ ڈیسک) فحاشی و عریانی ہی معاشرے کیلئے کچھ کم تکلیف دہ ناسور نہیں لیکن اگر اس کے ساتھ ہٹ دھرمی اور ڈھٹائی بھی شامل ہوجائے تو اس کا زہر دوچند ہوجاتا ہے۔ برازیل سے تعلق رکھنے والی فحش اداکارہ کمیلا وارنک بھی بے حیائی کی ایک ایسی ہی مثال ہے، جس نے یہ کہہ کر دنیا میں ہنگامہ کھڑا کردیا کہ اسے یقین ہے کہ وہ جو کام کر رہی ہے قدرت اسے منظور کرے گی اور دوسروں کی طرح وہ بھی نجات پائے گی۔ 25 سالہ کمیلا ایک ٹی وی شو میں شریک تھی جہاں اس سے سوال کیا گیا کہ وہ اپنے کام پر اعتراض کرنے والوں کو کیا جواب دیں گے۔ کمیلا نے پادریوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح وہ اپنا کام کرتے ہیں اسی طرح وہ بھی اپنا کام کرتی ہے اور جس طرح پادری سمجھتے ہیں کہ ان کی بخشش ہوجائے گی اسی طرح وہ بھی سمجھتی ہے کہ اسے بھی نجات مل جائے گی۔ 
اس کا مزید کہنا تھا ”لوگوں کو دوسروں کے کردار پر باتیں کرنے کی عادت ہوتی ہے۔ وہ چاہتے ہیں کہ آپ زندگی اسی طرح گزاریں جس طرح وہ چاہتے ہیں لیکن میں اس کے ساتھ اتفاق نہیں کرتی۔ میرا خیال ہے کہ قدرت ہمارے ظاہری کاموں کی بجائے ہمارے دل کو دیکھتی ہے۔ اگر آپ دوسروں کو دکھ نہیں پہنچاتے بلکہ ان کی خوشی کا باعث بنتے ہیں تو یہ کام چرچ میں دن رات گزارنے سے کم نہیں ہے۔“ 
کمیلا کا یہ انٹرویو نشر ہوتے ہی برازیلی سوشل میڈیا پر ایک طوفان برپاہوگیا۔ اس پر تنقید کرنے والوں کا کہنا ہے کہ وہ اپنے شرمناک پیشے کی وجہ سے تو جہنم میں جائے گی ہی لیکن اس بیان کی وجہ سے یقینا اس کا عذاب مزید سخت ہوجائے گا۔ دوسری جانب اس کے آبائی شہر ریو میں کچھ لوگوں نے اس کیلئے حمایت کا اظہار بھی کیا اور کہا کہ وہ جو بھی کرتی ہے کم از کم کسی کو نقصان نہیں پہنچاتی اور دوسروں کیلئے دکھ اور تکلیف کا باعث نہیں بنتی۔لیکن ان کی تمام باتوں نے لوگوں کو مشتعل کر دیا ہے اور انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

متعلقہ خبریں