خلائی مخلوق کی بیٹی

2016 ,دسمبر 3



میلبرن (شفق ڈیسک) ہم خلائی مخلوق کے متعلق قصے کہانیاں تو بہت سنتے آئے ہیں لیکن اب ایک آسٹریلوی لڑکی نے خلائی مخلوق کی اولاد ہونے کا حیران کن دعویٰ کر دیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق میلبرن کی رہائشی 22 سالہ لی کیپیٹیلی کا کہنا ہے کہ بچپن سے ہی میرا غیرمرئی مخلوقات سے سامنا ہوتا آ رہا ہے۔ بلوغت کی عمر کو پہنچنے تک میں انہیں جھٹلاتی آئی۔ تاہم جب میں 13سال کی ہوئی تب ایک رات خلائی مخلوق کا ایک فرد میرے پاس آیا اور اس نے مجھے تمام کہانی سمجھائی۔ اس شخص نے اپنا نام میزریتھ (Mezreth) بتایا تھا۔اس کا کہنا تھا کہ میری پیدائش سے قبل ایک رات جب میری ماں سو رہی تھی تب انہوں (خلائی مخلوق) نے اس کے بیضوں سے اپنے ڈی این اے کا اختلاط کروا دیا تھا جس سے میری پیدائش ہوئی۔ میزریتھ نے مجھے بتایا کہ میں مخلوط النسل ہوں۔ میری ماں انسان جبکہ باپ خلائی مخلوق کا فرد ہے۔ کیپیٹیلی کا مزید کہنا تھا کہ میں بچپن ہی سے اپنی دیگر ہم عمر لڑکیوں سے مختلف سوچتی تھی۔ میزریتھ نے مجھے بتایا کہ میرے مخلوط النسل ہونے کی وجہ سے ہی میں دیگر لڑکیوں سے مختلف ہوں۔ اس نے کہا کہ ماضی کے وہ انوکھے تجربات، جنہیں میں بھول جانا چاہتی ہوں، وہ حقیقت ہیں۔ کئی سالوں تک میں سمجھتی رہی کہ مجھ سے خلائی مخلوق کی ملاقاتیں محض خواب ہیں لیکن میزریتھ کی ملاقات کے بعد مجھے یقین آ گیا کہ وہ حقیقت تھا۔ اس کے بعد بھی میزریتھ نے مجھ سے کئی ملاقاتیں کی اور مجھے میرے ورثے کے متعلق بتایا اور سمجھایا کہ میں ستارے کا بچہ ہوں۔ کیپیٹیلی نے ’’ستارے کا بچہ‘‘ ہونے کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ستارے کا بچہ وہ ہوتا ہے جو انسانوں کی طرح زمین پر پیدا ہوا ہو لیکن نسلاً وہ پوری طرح انسان نہ ہو۔ اس کے ڈی این اے میں خلائی مخلوق کی آمیزش ہو۔میزریتھ نے مجھے یہ بھی بتایا کہ مجھے زمین پر اس وجہ سے رکھا گیا ہے تاکہ میں یہاں کی زندگی کا مشاہدہ کروں۔ میزریتھ نے ان ملاقاتوں میں مجھے خلائی سفر کرنا بھی سکھا دیا ہے اور اب میں مختلف کائناتوں کے درمیان سفر کرنے کے قابل ہوں۔ اب تک میں خلائی سفر کے کئی ایڈونچر کر بھی چکی ہوں۔شروع میں مجھے اپنے سفر کی منزل پر کنٹرول نہیں ہوتا تھا، مجھے اپنی خواہش کے برعکس خلا میں کسی دوسری طرف چلی جاتی تھی لیکن اب میں پوری طرح سیکھ چکی ہوں۔اب میں اگر مریخ پر جانا چاہوں تو میں جا سکتی ہوں۔ میں جب چاہوں مریخ پر جا سکتی ہوں۔ جب ماں کو میرے متعلق اس حقیقت کا علم ہوا تو اسے سمجھنے میں کچھ وقت لگا۔ اس نے سٹار چائلڈز کے متعلق انٹرنیٹ پر تلاش کی۔ میں بچپن میں انہیں یہ سمجھاتی تھی لیکن وہ نہیں مانتی تھیں لیکن انٹرنیٹ پر اس کے متعلق کافی کچھ پڑھنے کے بعد انہیں بھی یقین آ گیا۔

متعلقہ خبریں