اور چیف جسٹس بھی؟

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع اکتوبر 14, 2016 | 05:20 صبح


اسلام آباد (مانیٹرنگ) چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے سپریم کورٹ کے 3 رکنی بنچ کی سربراہی کرتے ہوئے اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبے سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف پنجاب حکومت کی درخواست کی سماعت کی۔پہلے روز ان کی طرف سے اخبارات میں ریمارکس شائع ہوئے کہ عوام سے جمہوریت کے نام پر مذاق ہورہا ہے اور ملک میں جمہوریت کے نام پر بادشاہت قائم ہے۔ اب عوام کو چاہئے کہ وہ اپنے ساتھ ہونے والے ناروا رویئے کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں۔ اگلے روز اسی کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے وضاحت کی کہ انہوں نے ع

وام کو اُٹھ کھڑے ہونے کو نہیں کہا۔ ایسا نہیں کہا کہ عوام حکومت کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں ، عدالت میں بیٹھ کر غیر ذمہ دارانہ گفتگو نہیں کر سکتے ۔