بچوں کو اغوا کرکے زیادتی کا نشانہ بنانے والوں کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے؟ صدر مملکت نے ایسی تجویز دے ڈالی جس کی آپ بھی حمایت کریں گے

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع دسمبر 29, 2016 | 07:05 صبح

منیلا (ویب ڈیسک)  منیلا (نیوز ڈیسک) فلپائن کے نئے صدر ڈوٹیرٹے اپنے دبنگ اور بے خوف  بیانات اور متنازعہ اقدامات کے حوالے  سے خصوصی شہرت رکھتے ہیں۔ وہ منشیات فروشوں کے قتل عام  کے حامی ہیں مگر اب انہوں  نے ایسی بات کی ہے جسے پڑھ کر آُ بھی کچھ سوچنے پر مجبور ہو جائیں گے ۔

ایک انٹرنیشنل ویب سائٹ کے مطابق  صدر ڈوٹرٹے نے ایک تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کرپشن کرنے والوں کو خبردار کیا کہ وہ اس کام سے باز آجائیں ورنہ وہ خود انہیں ہیلی کاپٹر میں بٹھا کر فضا میں لیجائی

ں گے اور ہزاروں فٹ کی بلندی سے زمین پر گرا کر ہلاک کریں گے۔ ڈوٹیرٹے نے کہا کہ  میں یہ پہلے بھی کرچکا ہوں تو اب کیوں نہیں کرسکتا۔‘‘ 
پھر انہوں نے خود ہی وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ جب وہ ڈواؤ شہر کے میئر تھے تو مجرموں کو اپنے ہاتھوں قتل کرتے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ منشیات فروشوں کو ڈھونڈ کر وہ خود ان کے سر میں گولیاں مارتے تھے جبکہ انہوں نے ایک چینی بچے کو اغوا کرنے والے مجرم کو ہیلی کاپٹر سے گرا کر ہلاک کیا۔ 
اس بچے کو 1988ء میں اغوا کیا گیا تھا اور اس کے والدین کی جانب سے بھاری تاوان ادا کئے جانے کے باوجود اسے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ صدر ڈوٹرٹے کا کہنا تھا کہ اغواء کار کو پکڑا گیا اور انہوں نے اپنے ہاتھوں اسے لرزہ خیز سزا دی تھی۔ انہوں نے ہیلی کاپٹر کے پائلٹ کو حکم دیا کہ وہ اسے مناسب بلندی پر لے جائے اور پھر انہوں نے اغو کار کو ہزاروں فٹ کی بلندی سے زمین پر پٹخ دیا