سی ٹی ڈی پرچھاپہ مارنے یا گرفتاری سے قبل اجازت لینے کی پابندی۔۔۔کس سے؟ملزم سے؟؟

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع نومبر 20, 2016 | 17:50 شام

 

 

 

کراچی(مانیٹرنگ) آئی جی کاؤنٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ نے دہشت گردی کے خلاف قائم کی جانے والی خصوصی فورس سی ٹی ڈی کو نئی ہدایات جاری کردیں جس کے تحت آئندہ چھاپہ مارنے یا گرفتاری سے قبل اعلیٰ افسران سے اجازت لینا ضروری ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں دہشت گردی کے خلاف جاری آپریشن کے خلاف بنائی جانے والی خصوصی فورس سی ٹی ڈی کے خلاف شکایات موصول ہونے کے بعد آئی جی کاؤنٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ نے نئی پابندیاں عائد کردیں۔

آئی جی کی جانب سے عائد کی گئی پابندیوں کے بعد تمام سی ٹی ڈی اہلکاروں کو ہدایات جاری کی گئیں ہیں کہ پورے ملک اور بالخصوص کراچی میں چھاپے یا گرفتاری سے قبل اعلیٰ افسران کو اعتماد لینا لازم ہوگا۔

 نئی پابندیوں کے تحت پیشگی اطلاع کے بغیر سی ٹی اہلکار کسی بھی جگہ پر چھاپہ یا گرفتاری کرنے کے مجاز نہیں ہوں گے تاہم کسی بھی کارروائی سے قبل اہلکاروں کو اعلیٰ افسران کی اجازت لازم لینی ہوگی۔

خیال رہے دو روز قبل کراچی سی ٹی ڈی کی تحویل میں ایک شخص جاں بحق ہوگیا تھا جس کی لاش سرکاری اسپتال پہنچائی گئی، اسپتال حکام کے مطابق مقتول کے جسم پر تشدد کے نشانات تھے تاہم سی ٹی ڈی نے موقف اختیار کیا ہے کہ ملزم تفتیش کے دوران بھاگنے کی کوشش کررہا تھا۔‘

 سی ٹی ڈی حکام نے کہا ہے کہ ’’مقتول کو روکنے کی کوشش کی گئی تو اُس نے تیسری منزل سے چھلانگ لگا دی جس کے نتیجے میں وہ جاں بحق ہوا۔ تفتیش کے دوران یہ بھی انکشاف ہوا کہ ملزم اجرتی قاتل تھا‘‘۔