پستہ قد بھارتی کا نام گینز بک میں شامل

2017 ,جولائی 1



مدھیا پردیش(مانیٹرنگ ڈیسک): بھارتی ریاست مدھیا پردیش کے رہائشی پچاس سالہ بیسوری لال پورے گاؤں کی آنکھ کا تارا ہیں اور اس کی وجہ کچھ اور نہیں بلکہ ان کا پستہ قد ہے۔

جی ہاں عمر پچاس سال اور قد صرف 29انچ،بیسوری لال کا شمار دنیا کے چند پستہ قامت افراد میں کیا جاتا ہے جن کے ماں باپ کی موت کے بعداب ان کی بہن ہی ان کا خیال رکھتی ہیں۔

بچوں کی مانند گود میں اٹھائے ہوئے بیسوری لال نہ صرف اپنی بہن بلکہ گاؤں بھر کی آنکھ کا تارا ہیں جنہیں ہر کوئی اب تک بچہ ہی سمجھتا ہے۔بیسوری لال اب بھی بچوں کی کپڑے ہی پہنتے ہیں جبکہ جوتے بھی سب سے چھوٹے سائز کے پہنتے ہیں۔

بیسوری لال کی بہن کے مطابق پیدائش کے وقت بیسوری کا قد نارمل بچے کے جتنا ہی تھا تاہم جیسے جیسے ان کی عمر بڑھنے لگی تو گھر والوں نے دیکھا کہ ان کا قد بڑھنا رُک گیا ہے ۔ڈاکٹروں اور دواؤںکا خرچہ برداشت نہ کرنے کے سبب ان کا اب تک علاج نہیں کروایا جا سکا۔

بیسوری لال کا 55 سالہ بھائی گوپی لال بالکل نارمل قدو قامت کا ہے،اس کا کہنا ہے کہ ہمیں فخر ہے کہ بیسوری ہمارے خاندان کا حصہ ہے۔مختلف گاؤں کے لوگ میرے بھائی کو دیکھنے کے لئے ہمارے گھر آتے ہیں جو کہ ہمارے لئے اعزاز کی بات ہے۔

بیسوری بھی خود اپنے غیر معمولی قد پربہت خوش ہیں،ان کا کہنا ہے کہ مجھے اپنے پستہ قد پر کوئی شرمندگی ہے اور نہ کوئی تکلیف ہے۔لوگ مجھ سے بہت محبت کرتے اور اہمیت دیتے ہیں۔

متعلقہ خبریں