سب کچھ لٹا کے ہوش میں آئے تو کیا کیا

2017 ,جون 29



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): اچھا ہے کہ اس وقت جبکہ پوری قوم کرکٹ ٹیم کی فتح کی خوشی سے سرشار ہے اور اِدھر اُدھر کے حالات کی طرف ان کی توجہ نہیں جا رہی ورنہ ہاکی ٹیم والے دیکھتے کہ ان کی وطن واپسی پر ان کی کیسی جی آیاں نوں ہوتی۔ ہاکی میں اس طرح کی شرمناک شکست کو قوم آسانی سے ہضم نہ کر پاتی کھلاڑیوں کو برقعہ پہن کر ادھر اُدھر منہ چھپا کر بھاگنا پڑتا۔ ہاکی ٹیم نے ورلڈ کپ کوالیفائنگ رائونڈ میں نہایت شرمناک کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور دس میں سے ساتویں پوزیشن حاصل کی۔اس پر ہاکی فیڈریشن والوں اور کھلاڑیوں کو خود ہی شرم کرنی چاہیے۔ ہاکی ٹیم کی کارکردگی دیکھ کر لگتا ہے کہ ورلڈ کپ میں شرکت کا خواب دیکھنا بھی اس وقت سوائے ذہنی عیاشی کے اور کچھ نہیں۔ اب ہماری ہاکی فیڈریشن کو ہوش آبھی گیا تو بقول شاعر

’’سب کچھ لٹا کے ہوش میں آئے تو کیا کیا‘‘

اب کہتے ہیں عید کی چھٹیوں کے بعد بڑے پیمانے پر ہاکی فیڈریشن میں تبدیلیاں ہوں گی۔ ایسا بیان عرصہ دراز سے ہر شکست کے بعد سامنے آتا ہے۔ مگر تبدیلیاں ندارد۔ وہی گھسے پٹے چہرے، عمر رسیدہ عہدیدار پرانی ڈگر پر چل رہے ہیں انہیں شکست یا جیت کی نہیں اپنے اپنے عہدوں اور نوکریوں کی فکر رہتی ہے ۔ جب تک کھلاڑیوں سے لے کر عہدیداروں تک میں کوئی تبدیلی سامنے نہیں آتی تبدیلیوں کا نعرہ صرف روایتی نعرہ ہی رہے گا اور کچھ عرصہ بعد واقعی تبدیلیاں نہیں آتیں تو ہاکی کے مزار پر کوئی فاتحہ پڑھنے والا بھی نہیں ملے گا…

متعلقہ خبریں