عمران خان باجوہ صاحب کو زہر کیوں لگتے ہیں؟؟...ریٹائرمنٹ سے پہلے اثاثوں کا سامنے آنا ....اتفاق یا سازش؟؟... عدم ایکسٹنشن احمد نورانی کیلئے نعمت ثابت

2022 ,نومبر 29



عمران خان نے راولپنڈی کے عظیم اجتماع میں اسمبلیوں سے باہر جانے کا اعلان کیا ۔ اسمبلیاں توڑنے کی بات نہیں کی۔ اسمبلیاں توڑتے ہیں، عدالتیں رات کو کھل کر وہی کچھ کر سکتی ہیں جو جنرل باجوہ کی پرانی ٹیم کہے گی۔ نئی ٹیم پوری طرح بروئے عمل میں کچھ دن تو لے گی۔

عمران خان نے جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع کی تجویز پیش کردی  - ایکسپریس اردو

جنرل عاصم منیر جن کو نمبر ٹنگنے والے جنرل سید حافظ عاصم منیر کہہ کر اپنی محبت جتلاتے ہیں وہ امید لگا کر بیٹھے ہیں کہ جنرل باجوہ نے جس طرح تحریک انصاف کا عرصہ حیات تنگ کیا تھا جنرل عاصم منیر اسی طرح معاملات کو آگے چلائیں گے۔ ایسی امید تو نہیں ہے۔ ہو سکتا ہے نواز شریف بھی ایسی ہی توقعات رکھتے ہوں کیونکہ انہوں نے پورا زور لگا کر انہیں فوجی سربراہ لگوایا ہے۔ ایک بات نوٹ کر لیں بلکہ لکھ لیں۔ جنرل عاصم منیر یا کوئی بھی جنرل نواز شریف کی توقعات ، احکامات اور خواہشات پوری نہیں کر سکتا۔ کون ہے جو عمران خان کے قتل کا الزام اپنے سر لے سوائے جنرل باجوہ صاحب کے جو کسی بھی حد تک چلے گئے تھے۔ نئے آرمی چیف جب لیگیوں کی خواہشات کی بجاآوری نہیں کریں گے تو یہ لوگ مزاحمتی بیانیے پر اتر آئیں گے۔ کسی بھی فوجی سے آپ کوئی بھی توقع رکھ سکتے ہیں مگر ایک بھی ایسا نہیں ملے گا جو پاکستان کے غداروں سے نرم رویہ اختیار کرنے کا حامی ہو۔ پی ٹی ایم کیا کہتی رہی کئی اور کے بیانات سامنے ہیں۔ ان کے ساتھ جنرل باجوہ صاحب کمپرومائز کیوں کر گئے۔ ان کو شہباز شریف نے حکومت کا حصہ کیوں بنایا؟۔

جنرل عاصم منیر نے مرکزی مدرسہ دارالتجوید حفظ القرآن سے قرآن حفظ کیا
جنرل باجوہ کے اقتدار کے آخری دنوں میں ان کے اثاثے سامنے آئے ان کے سمدھی عبدالحمید ناصرعرف مٹھو کی جائیدادیں اور خود باجوہ صاحب کی اہلیہ اور بہو کے اربوں کے اثاثوں سے پردہ اٹھا۔ اس حوالے سے ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد بہت کچھ سامنے آنے والا ہے۔ عمران خان نے جو ایک بڑا کام کیا ہے سب سے بڑا کام۔ شاید اپنی زندگی میں سب سے بڑا کام۔ وہ جنرل باجوہ کی اس خواہش کو ٹھکرانا تھا جس میں علیم خان کو وزیر اعلیٰ پنجاب بنانے پر زور دیا گیا تھا۔ اس کا اعتراف جنرل باجوہ اور عمران خان دونوں نے کیاہے۔ پراپرٹی ٹائیکون کو اگر وزیر اعلیٰ پنجاب بنا دیا جاتا تو یہ باجوہ فیمی کے اثاثے جو اب 12ارب روپے کے ہیں وہ2سو ارب سے بھی بڑھ جاتے۔ علیم خان پر سی ڈی اے کی زمین پر ہاؤسنگ سوسائٹی بنانے کا الزام ہے اس کا افتتاح میجر جنرل(ر) اعجازامجد نے کیا تھا۔ جو جنرل باجوہ کے سسر ہیں۔ ناصر مٹھو کے ساتھ ساتھ اعجاز امجد بھی علیم خان کے پارٹنربتائے جاتے ہیں۔ عمران ریاض خان نے مٹھو باجوہ دوستی کا تذکرہ ایک انٹرویو میں2021ءمیں کیا تھا۔ علیم خان وزیر اعلیٰ نہ بن سکا تو اس سے کئی سو ارب کا"گھاٹا" پڑگیا۔ عمران خان شاید اس کے بعد سے زہر لگنا شروع ہوا ہوئے۔عمران ریاض بھی اس کے بعد ہی زیر عتاب آئے۔
احمدنورانی کی زندگی کو اتنا ہی خطرہ تھا جتنا ارشد شریف کو، مگر دستِ قاتل کے پاس اتنا وقت نہیں تھا۔ احمد نورانی اگر یہ سٹوری دو مہینے پہلے بریک کرتے تو ان کی لاش بھی امریکہ میں کہیں جھاڑیوں سے ملتی۔ ایکسٹنشن نہ ہونا احمد نورانی کو نئی زندگی دے گیا۔

اندازہ تھا کہ اس رپورٹ پر شدید ردِ عمل آئے گا: احمد نورانی | Independent  Urdu

متعلقہ خبریں