ایک فیصلہ اور مودی کی ماں بھی لائن میں

2016 ,نومبر 15



گجرات (شفق ڈیسک) بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے پانچ سو اور ہزار کے کرنسی نوٹوں پر پابندی کے فیصلے پر اُن کی پچانوے سالہ بوڑھی والدہ ہیرابین کو بھی بنک کی قطار میں اپنی باری کا انتظار کرتے ہوئے تکلیف دہ مرحلے سے گزرنا پڑا۔ تفصیلات کیمطابق بھارتی وزیراعظم کی 95 سالہ والدہ اپنے بیٹے کے فیصلے کے بعد رہائش گاہ سے 4500 روپے لے کر وہیل چیئر پر نوٹ تبدیل کروانے بینک پہنچی تو اُن سے پہلے کافی لوگ موجود تھے، جس پر بوڑھی ماں کو قطار میں کھڑے ہو کر اپنی باری کا انتظار کرنا پڑا۔ خیال رہے کہ نریندر مودی نے بھارت میں بڑھتی ہوئی کرپشن کو روکنے کیلئے 500 اور ہزار کے نوٹوں پر پابندی عائد کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ اب یہ خریداری کیلئے قابل قبول نہیں ہوں گے جبکہ ایسے افراد جن کے پاس یہ کرنسی موجود ہے وہ فوری طور پر بینک سے تبدیل کرائیں۔ بھارتی وزیر اعظم کے اس اعلان کے بعد عوام کی بڑی تعداد اپنی جمع پونجی بچانے کیلئے بینکوں کے باہر جمع ہے تاہم اس فیصلے سے جہاں سب کو پریشانی کا سامنا ہے وہیں مودی کی والدہ ہیرابین کو بھی نوٹوں کی تبدیلی میں مشکلات درپیش آئیں۔

متعلقہ خبریں