نابالغ طالبات کی آبروریزی

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع دسمبر 03, 2016 | 20:07 شام

ڈانا (شفق ڈیسک) مہاراشٹر کے بلڈانا میں نابالغ طالبات کی آبروریزی کا ایک سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے۔ پولیس نے 11 افراد کو 12 نابالغ قبائلی طالبات کی آبروریزی کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔ یہ تمام مجرم طالبات کے سکول ننادھی آشرم ہی وابستہ ہیں۔ ان میں سے سات مجرم سکول کے ٹیچر ہیں جبکہ چار مجرم سکول کے عملہ کے ہیں۔ گرفتار لوگوں میں اسکول کا ہیڈ ماسٹر دگمبر کامت اور اسکول کے ادارہ کا چیئرمین گجانن ئرے بھی شامل ہیں۔ ننادھی آشرم ایک سرکاری سکول ہے۔ جہاں غریب قبائلی بچوں کو تعلیم دی جاتی ہے۔ اب تک 5

لڑکیوں نے جنسی استحصال کی شکایت کی ہے، جبکہ پولیس نے صرف ایک لڑکی کی شکایت پر ایف آئی آر درج کی ہے۔ بلڈانا کے ایس پی سنجے باوسکر کیمطابق اب تک کی جانچ میں سامنے آیا ہے کہ ایک خاکروب اتوسنگھ پوار نے 13 سال کی ایک لڑکی کی آبروریزی کی۔ ہم نے دیگر لڑکیوں کے والدین سے بھی سامنے آکر جانچ میں تعاون کی اپیل کی ہے۔