معروف اسلامی رہنما نے قیامت کے متعلق ایسا اعلان کردیا کہ جان کر آپ بھی پریشان ہوجائیں گے

2017 ,اپریل 23



سڈنی (مانیٹرنگ ڈیسک) مغربی میڈیا میں دنیا کے خاتمے کے متعلق قدیم کاہنوں اور راہبوں کی پیشگوئیوں کا تذکرہ آئے روز سننے کو ملتا ہے لیکن جب آسٹریلیا میں ایک مسجد کے امام نے قرب قیامت کی کچھ نشانیاں بیان کیں تو ہر طرف ہنگامہ کھڑاہوگیا۔ 
میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر عمر نجرانی نے سڈنی کے مغرب میں آبرن کے علاقے میں واقع مسجد میں قرب قیامت کے موضوع پر ایک خطاب کیا۔ ان کا کہنا تھا ”جب دنیا کا انجام قریب ہوگا تو خواتین لباس پہن کر بھی برہنہ نظر آئیں گی، اور ان کی تعداد بھی مردوں کی نسبت بڑھ جائے گی۔ ہم جنس پرستی عام ہوجائے گی اور گانے والیوں اور آلات موسیقی کی فراوانی ہوگی۔ مرد خواتین جیسے اور خواتین مردوں جیسی نظر آئیں گی۔ زنا کاری عام ہوگی اور کوئی اسے روکنے والا نہ ہوگا۔ بچوں کی ایک بڑی تعداد کو معلوم نہ ہوگا کہ ان کا باپ کون ہے، یہاں تک کہ ماں کو بھی معلوم نہ ہوگا کہ اس کے بچے کا باپ کون ہے۔“ڈاکٹر نجرانی کے خطاب کی ویڈیو عام ہونے کے بعد آسٹریلیا سے لے کر یورپ اور امریکہ تک ہر کوئی ان کے خلاف آگ اگلتا نظر آرہا ہے۔ شاید اس کی وجہ یہ بھی ہے کہ اہل مغرب کو اپنے ہاں یہ نشانیاں کچھ زیادہ ہی واضح نظر آرہی ہیں۔ آسٹریلوی میڈیا میں ڈاکٹر نجرانی، ان کے پس منظر، تنظیمی وابستگی اور آسٹریلیا میں ان کے اثر و رسوخ کے بارے میں بھی تفصیلات شائع کی جارہی ہیں۔ انہیں اور ان کی تنظیم کو شدت پسند اور خطرناک قرار دے کر ان کے خلاف فوری اور سخت ترین اقدامات کا مطالبہ بھی کیا جارہا ہے۔ لیکن ایک طرف دیکھا جائے تو ان کی بتائی گئی نشانیاں غلط نہیں ہے۔ اور یہ خاص طور پر مسلمانوں کے لیے فکر کی بات ہے۔

متعلقہ خبریں