ہے کسی میں جمائما والی ہمت جو اتنا بڑا بیان برطانیہ میں بیٹھ کر دے

2017 ,جون 8



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): جمائما کے اندر جو خوبصورت انسانی روح چھپی ہے جو خوبصورت جذبات سے بھرا دل ہے اس کا بے شمار موقعوں پر مظاہرہ سامنے آتا رہتا ہے۔ ایک مغربی عورت ہونے کے باوجود وہ دنیا بھر کے مظلوم انسانوں کے حوالے سے بھی دلی ہمدردی رکھتی ہیں۔ معلوم نہیں کیوں خان صاحب ان سے نبھاہ نہ کر سکے۔ ورنہ یہ تو وہ انمول روح ہے جو کسی بھی قالب میں بسیرا کرے وہ اپنے اردگرد سکون کی روشنی بکھیر دیتا ہے۔ اب برطانیہ میں مہاجرین کی آمد کیخلاف انکے اپنے سگے بھائی نے جو بیان دیا کہ امیگریشن قوانین سخت کرکے مہاجرین کے بڑھتے ہوئے سیلاب کو روکا جائے ورنہ یہاں حالات بگڑ سکتے ہیں۔ اس پر جمائما بھڑک اٹھیں انہوں نے جوابی بیان میں بھائی کو یاد دلایا کہ ہمارے دادا بھی مہاجر تھے۔ برطانیہ میں یا کہیں بھی ہونیوالی دہشتگردی کا تعلق مہاجرین سے نہیں۔ انہوں نے کیا خوب کہا کہ جتنے لوگ دہشت گردی کے واقعات میں مرے ہیں اس سے کئی گنا زیادہ لوگ برطانیہ میں حادثات میں ہلاک ہوئے ہیں۔ اب ہے کسی میں اتنی ہمت جو اتنا بڑا بیان برطانیہ میں بیٹھ کر دے۔ یوں لگتا ہے کہ اس حسین عورت کے اندر انسان کا انسانیت کا درد بہت زیادہ ہے۔ گویا …؎

خنجر چلے کہیں پہ تڑپتے ہیں ہم امیر

سارے جہاں کا درد ہمارے جگر میں ہے

والی کیفیت اس پر طاری ہے ۔ ورنہ سچ کہیں تو اس وقت خود برطانیہ میں آباد تارکین وطن مہاجرین کے بڑھتے ہوئے سیلاب سے پریشان ہیں اور اسکے آگے بند باندھنے کی ضرورت پر زور دے رہے ہیں۔ کیونکہ اسی میں ان کی بقا ہے ورنہ دہشتگردی کے طوفان میں انکے بھی خس و خاشاک کی طرح بہہ جانے کا خطرہ ہے۔

متعلقہ خبریں