کالاباغ ڈیم حکومت کے مجوزہ منصوبوں میں شامل ہے،ذرائع

تحریر: فضل حسین اعوان

| شائع اکتوبر 01, 2016 | 14:50 شام

لاہور(شیر سلطان ملک) پاکستان کو بجلی کا شدید بحران درپیش ہونے کے باوجود سابقہ حکومتوں نے اس کی تعمیر کے سلسلہ میں کوئی عملی اقدام نہیں کیا اگرچہ زبانی کلامی نعرے لگانے اور وعدے کرنے میں کوئی کسر نہ چھوڑی گئی ۔ معاشی ماہرین عرصہ دراز سے کہہ رہے تھے کہ کالا باغ ڈیم پاکستان کیلئے ایک سونے کی چڑیا کی مانند ہے ۔ یہ ایک منصوبہ ہے جس پر عمل درآمد کرتے ہوئے ہم اقوام عالم میں اپنا نمایاں مقام بنا لیں گے ۔ اسی حوالے سے تازہ ترین اطلاعات کے مطابق کالا باغ ڈیم حکومت کے تعمیراتی منصوبوں کی
فہرست میں شامل ہونے کا انکشاف ہوا ہے،یہ اہم ترین انکشاف حکومت کی جانب سے مجوزہ منصوبوں کی فہرست سینیٹ میں پیش کئے جانے کے بعد سامنے آیا ہے۔انگریزی جریدے ڈان کے مطابق جمعہ کو وزارت پانی و بجلی کی جانب سے ایک سوال کے جواب میں تحریری طور پر ایوان بالا کو بتایا گیا کہ 3600میگا واٹ بجلی کی پیداواری صلاحیت کے حامل کالا باغ ڈیم کی کا نقشہ اور ٹینڈر دستاویزات1988سے ہی مکمل ہیں اس حوالہ سے سینیٹر عثمان کاکڑ کے رد عمل پر وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی نے کہا کہ کالا باغ ڈیم سے 3600 میگا واٹ بجلی حاصل ہو سکتی ہے،کالاباغ ڈیم کو ہائیڈرل پاور پراجیکٹ کے تعمیرات کیلئے تیارمنصوبوں کی فہرست میں شامل کرلیا گیا ہے، بے شک اس حوالے سے پارلیمنٹ میں بحث کرالی جائے۔