کشمیریوں پر ظلم کی انتہا

2019 ,ستمبر 19



آج کشمیر میں 46 دن ہو گئے کرفیو جاری ہے موبائل فون انٹرنیٹ بند ہے لوگوں کو گھروں سے باہر نکلنے کی اجازت نہیں دی جا رہی اور نوجوان لڑکوں کو قید کیا جا رہا ہے کھانے پینے کی چیزوں کی شدید قلت ہے سکول بند ہیں افسوس آج پوری دنیا تماشہ دیکھ رہی ہے مسلمان حکمران غفلت کی نیند میں مخمور ہیں آخر کب تک کشمیری ظلم برداشت کریں گے۔۔۔ افسوس کی بات تو یہ ہے کہ کشمیریوں نے مرنے والے بہن بھائیوں، رشتے داروں اور جان پہچان کے لوگوں کو گھر میں ہی دفن کرنا شروع کر دیا ہے۔ بھارت نے کشمیروں کی زندگی کو وبال جان بنا دیا ہے۔ ان کی زندگی کو برباد کرنے کے لیے خوراک کی بندش ہتھیار کے طور ہر استعمال کر رہا ہے۔ جس کی وجہ سے درجنوں افراد اور شیر خوار بچوں کے جاں بحق ہونے کی اطلاعت ہیں۔ لیکن اقوام متحدہ سمیت تمام ادارے حالت کو جانتے ہوئے دیکھتے ہوئے خاموش ہیں اور کشمیری ظلم کی بھٹی میں جل رہے ہیں۔۔۔۔ اب تو اللہ ہی کشمیریوں کا مددگار بن سکتا ہے۔۔۔ دعا ہے یا اللہ  کشمیریوں کی مدد فرما۔۔۔آمین

متعلقہ خبریں