سائنسدان نا ممکن کو ممکن بنانے کیلئے سر جوڑ کر بیٹھ گئے، کیا کامیابی مل گئی؟

2017 ,اگست 23



اسلام آباد(مانیٹرنگ رپورٹ) شروع سے ہی انسان مردوں کو دوبارہ زندہ کرنے جدوجہد میں لگا ہوا ہے، اس مقصد کیلئے آب حیات کی تلاش کی گئی، سفلی علوم و دیگر ٹوٹکوں کا سہارا بھی لیا گیا،پر کچھ ہاتھ نہ لگا۔ لیکن اب سائنسدان بھی اس میدان میں کود چکے ہیں۔ بائیو کوارک نامی ایک امریکی فرم نے قدرت کو چیلنج کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے مردوں کو دوبارہ زندہ کرنے کے تجربات کا آغاز کردیا ہے۔ اس مقصد کیلئے 2016 کے آخر میں اعلان کیا گیا تھا کہ بھارت میں تجربہ گاہ قائم کر کے تجربات کا آگاز کیا جائے گا، لیکن بھارتی میڈیکل ریسرچ کونسل کی جانب سے اجازت نہ ملنے پرلاطینی امریکا میں کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
فرم کی چیف ایگزیکیوٹو آفیسر آئرا پاسٹر کا کہنا ہے کہ مردوں کو زندہ کرنے کیلئے کئے جانے والے تجربات میں مردہ شخص کے خون سے بنیادی خلیے یعنی اسٹم سیلز حاصل کر کے دوبارہ اسی شخص کے کون میں داخل کئے جائیں گے۔ اس کے بعد متوفی کی ریڑھ کی ہڈی میں پیپٹائیڈز انجیکٹ کئے جائیں گے اور اس کے عصبی نطام کو لیزر کے زریعے متحرک کرنے کی کوشش کی جائے گی جس میں سائنسدانوں کو پہلی سیڑھی کے طور پر کامیابی بھی مل چکی ہے۔ پھر ایم آر آئی اسکینز کے زریعےجسم میں پیدا ہونے والی تبدیلیوں کی نگرانی کی جائے گی۔

متعلقہ خبریں