چودہ سو سال پہلے کی باتیں اب سائنس کی تحقیق میں

2016 ,دسمبر 18



لندن (شفق ڈیسک) اللہ تعالیٰ نے کئی طرح کی خطرناک بیماریاں پیدا کی ہیں لیکن ساتھ ہی انکے علاج کیلئے پودے اور بیج پیدا کئے ہیں۔ ایسے ہی بہترین پودوں میں سے ایک کلونجی کا ہے جسکے بارے میں حضرت محمدﷺ نے فرمایا تھا کہ اس میں موت کے سوائے ہر بیماری کا علاج موجود ہے۔ یہ پودا نہ صرف اب بلکہ کئی صدیوں سے استعمال کیا جا رہا ہے عربی اسے عمتوں والا بیج بھی کہا کرتے تھے کہ اس میں شفاء موجود ہوتی ہے۔ جو باتیں1400 سال قبل ہمارے مذہب نے ہمیں بتائیں ہر گزرتے دن کیساتھ سائنس بھی مان رہی ہے۔ اس پودے پر متعدد ریسرچز ہوچکی ہیں اور یہ بات مکمل طور پر واضح ہوچکی ہے کہ یہ ہر طرح کی سنگین بیماری کا علاج کرنے کی طاقت رکھتا ہے۔ 2007ء میں مرگی زدہ بچوں پر کی گئی تحقیق میں یہ دیکھا گیا کہ کلونجی کا پانی دینے سے ان کے دورو میں خاطر خواہ کمی ہوئی۔ ذیابیطس ٹائپ 2 دن میں دو گرام کلونجی کے استعمال سے یہ دیکھا گیا کہ خون میں شوگر کی مقدار کم ہوتی ہے اورساتھ ہی دیگر عوامل جیسے ہیموگلوبن کو صحت مند لیول پر رکھنے میں مدد ملتی ہے۔ دمہ کیلئے ایک اور تحقیق میں یہ بات ثابت شدہ ہے کہ پانی میں کلونجی ابل کر پینے سے دمہ میں آرام آتا ہے اور ساتھ ہی سانس کی نالیاں کھلتی ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ کلونجی میں Thymoquinone پایا جاتا ہے جو کہ دمہ میں آرام دیتا ہے۔ ٹانسلز کیلئے اگر آپ کو گلے میں درد، ٹانسلز وغیرہ کا مسئلہ درپیش ہو تو کلونجی کھانے سے یہ ٹھیک ہوجاتا ہے۔ اس میں موجود Phyllanthus niruri کی وجہ سے گلے کو سکون ملتا ہے اور درد میں کمی ہوتی ہے۔ بلڈ پریشر ایک تحقیق میں دیکھا گیا کہ اگردن میں دو بار 100 ملی گرام صبح اور 100 ملی گرام شام کو کلونجی دو ماہ تک استعمال کیا جائے تو بلند فشار خون کا علاج کیا جاسکتا ہے۔ کیمیکل ہتھیاروں کے زخم کیلئے ایک ریسرچ میں سائنسدانوں نے دیکھا کہ کیمیائی ہتھیاروں سے زخمی ہونے والے افراد کو پانی میں کلونجی ابال کی دی گئی تو ان کی درد میں کمی ہوئی اور ان کے زخموں کو بھرنے میں تیزی آگئی۔ کولون کینسر ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ کولون کینسر میں کلونجی آزمودہ ہے اور اسکے استعماک سے کینسر کی تکالیف کم ہونے لگتی ہیں۔ دردوں کیلئے اگرآپ کو جسم میں کہیں بھی درد رہتی ہے جیسے مر، گٹنوں، کندھوں وغیرہ میں تو کلونجی کے تیل کا استعمال کریں۔ اس تیل کی مالش سے آپ کے تمام دردوں میں کمی ہوجائے گی۔

متعلقہ خبریں