دوریاں ختم ہو گئیں اور پھر شروع ہو گئی لو سٹوری…

2017 ,اگست 4



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): لگتا ہے مسلم لیگ (ن) کے دو بڑوں کے درمیان برف پگھل رہی ہے۔ سابق وزیر داخلہ اور سابق وزیراعظم کے درمیان حکومت میں رہتے ہوئے جو سردمہری عود کر آئی تھی وہ حلقہ اقتدار کے ٹوٹنے کے بعد رفوچکر ہو گئی۔ گذشتہ روز جس طرح مسلم لیگ (ن) کے مری میں ہونے والے مشاورتی اجلاس میں چودھری نثار کو خاص طور پر وزیراعظم نے مدعو کیا اس میں یہ دونوں ایک بار پھر ہم پیالہ و ہم نوالہ بنے نظر آئے اور یوں دوستوں کے دل میں ٹھنڈ پڑ گئی اور مخالفوں کی نیندیں ایک بار پھر حرام ہونے لگی ہیں۔ کیونکہ ان دونوں کا یکجان ہونا ان کے مخالفوں کے لئے خاصہ پریشان کن ہوتا ہے۔ کچھ عرصہ سے یہ دونوں ایک دوسرے سے الرجک نظر آنے لگے تھے۔ جس کے پس منظر میں چودھری نثار علی صاحب…؎

کیوں دور دور رہندے او حضور میرے کولوں

مینوں دس دیو ہویا کی قصور میرے کولوں

کہتے بھی پائے گئے مگر میاں جی نے لب سیئے رکھے۔ البتہ ان کی محفلوں سے چودھری صاحب غائب نظر آنے لگے۔ یہ اس وقت کی بات ہے جب میاں صاحب اور چودھری جی دونوں حکومت میں تھے ایک وزیراعظم اور دوسرا وزیر داخلہ کہلاتا تھا۔ لہٰذا دونوں اکھڑے اکھڑے رہے۔ پھر اب وقت یہ ہے کہ نہ حکومت رہی نہ وزارت عظمیٰ نہ وزارت داخلہ دونوں اب تقریباً فارغ ہیں اسلئے انہیں لگتا ہے آرام سے بیٹھ کر سوچنے کا موقع ملا تو دل کا میل اتر گیا اور ایک بار پھر دونوں ہنستے مسکراتے مل بیٹھے تو دوریاں ختم ہو گئیں اور پھر شروع ہو گئی لو سٹوری…

متعلقہ خبریں