نوحہ عشق

2020 ,اپریل 24



آج مدینہ منورہ کے باسیوں نے پہلے روزے کا افطار آہوں اور سسکیوں میں گھروں میں بیٹھ کر کیا قریبی علاقے کے رہائشی اور ہوٹلوں میں موجود عملہ چھتوں سے گنبد خضری کو دیکھ کر اپنی بے بسی پر روتا رہا ۔کرفیو کی وجہ سے کسی کو باہر نکلنے کی اجازت نہیں تھی ۔تمام عاشقان رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم جو ہر سال مسجد نبوی میں افطار کے کئے دستر خوانوں کا اہتمام کرتے رہے ہیں آج اپنے گھروں میں افطار کے وقت حسرت اور لاچارگی کی مورت بنے ہوئے طرح طرح کے پکوانوں کو صرف آنسوؤں سے دیکھتے رہے
بچے بڑے بزرگ جن کو آقا کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی بارگاہ میں درود وسلام پیش کرنے کی جلدی میں اپنے گھروں کے دروازوں کو بند کرنے کی بھی پرواہ نہ ہوتی تھی اور ایک دوسرے پر سبقت لینے کے لئے اذان سے پہلے مسجد کی طرف جو بھاگنا شروع کر دیتے تھے وہ سب اداسی اور کرب میں مسجد نبوی کے بند دروازوں کے تصور میں بت بنے گھروں میں بیٹھے رہے
امام مسجد نبوی اور مؤذن اور دیگر خادمین کی حالت بھی بیان سے باہر ہے
سچ تو یہ ہے کہ!
یہ سوچ کر سب اہل دل کا کلیجہ پھٹا جاتا ہے کہ کیا ہمارے آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بھی ہمارے منتظر اور پریشان ہوں گے امت کے فراق پر
مسجد نبوی کے خالی صحن میں ملائیکہ صف در صف درود وسلام ضرور پڑھ کر ہمارے آقا کریم کے غم میں شامل ہوئے ہوں گے جو امت کو افطار اور ترواویح میں نہ پا کر انکو ہوا ہو گا
اے ہمارے کریم رب ! تجھے تیری رحمت اور عفو و درگزر کا واسطہ ہمیں ہمارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسل کی بارگاہ میں دوبارہ حاضری کا شرف عطا فرما ہمارے گناہ معاف فرما ہمارے حالوں پر رحم فرما😢
ہم پر باب رحمت اور باب سلام کھول دے 😢
آمین یا رب کریم بجاہ نبی الکریم♥️
التماس ہے کہ ہر سحر و آفطار میں آقا کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درد وسوز اور عشق سے ڈوبا ہوا سلام عشق ضرور پیش کریں
ہم یہاں سے پڑھیں وہ مدینے سنیں
ایسی اعلی سماعت پر لاکھوں سلام
صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کثیرا دائما ابدا ♥️آمین

متعلقہ خبریں