مراکش کی ملکہ حسن کے ساتھ دن دھاڑے نازیبا حرکات

2017 ,نومبر 14



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک): شمالی افریقا میں واقع مسلم عرب ملک مراکش میں جنسی آوارگی اور اخلاق باختگی کے آئےدن واقعات رونما ہورہے ہیں ۔اب تازہ واقعہ اس ملک کی ملکہ حسن کے ساتھ پیش آیا ہے۔ اس خوبرو دوشیزہ کا کہنا ہے کہ اس کے ساتھ ساحلی شہر طنجہ میں تین مردوں نے نازیبا حرکات کی ہیں۔انھوں نے پہلے اس پر زبانی فقرے کسے اور پھر ان میں سے ایک نے اس کو ہاتھ سے چھونے کی کوشش کی۔2014ء کی مس عرب فاطمۃ الزہرا الجمالی المعروف فاتی جمالی نے سوشل میڈیا ( سنیپ چیٹ ) پر ایک پوسٹ کے ذریعے اس واقعے کی اطلاع دی ہے۔اس نے بتایا ہے کہ 22 اگست کو طنجہ میں ساحل سمندر پر اس کو جنسی طور پر ہراساں کیا گیا اورنازیبا حرکت کی گئی۔

اس نے اپنی پوسٹ میں بتایا ہے کہ وہ اپنی کار کھڑی کرنے کے بعد پچاس میٹر دور ہی گئی ہوگی کہ تین مرد اس کے نزدیک آ گئے۔ پہلے انھوں نے فحش کلامی کی اور پھر ان میں سے ایک نے اس کے جسمانی اعضاء کو چھونے کی کوشش کی۔ فاتی کا کہنا ہے کہ ان کی اس حرکت کے بعد وہ بھاگ کھڑی ہوئی اور اپنی کار تک پہنچ گئی۔فاتی جمالی نے بدھ کو شائع شدہ اس پوسٹ نے مراکش کے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے بڑھتے ہوئے واقعات کی روک تھام کے لیے اقدامات کریں۔اسی ہفتے مراکش میں ایک لڑکی کو چند اوباشوں نے چلتی بس میں سرعام اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔اس واقعے کی ویڈیو فوٹیج منظر عام پر آنے کے بعد سوشل میڈیا پر سخت غم وغصے کا اظہار کیا جارہا ہے اور منگل کے روز مراکش کے مختلف شہروں میں اس واقعے کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے گئے تھے۔مراکش کے انسانی حقوق کے کارکنان اور سول سوسائٹی کے گروپوں نے شہریوں سے کیسا بلانکا ، رباط اور دوسرے شہروں میں مزید احتجاجی مظاہرے کرنے کی اپیل کی ہے اور اس سنگین سماجی مسئلے کا کوئی حل نکالنے کی اپیل کی ہے۔

متعلقہ خبریں