جعلی اکاؤنٹس کیس، جسمانی ریمانڈ کے دوران فریال تالپور کا بیان قلمبند

2019 ,جون 29



اسلام آباد(مانیٹرنگ رپورٹ) سابق صدر آصف زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور نے جعلی اکاﺅنٹس کیس میں جسمانی ریمانڈ کے دوران نیب کی تفتیشی ٹیم کو بیان ریکارڈ کرادیا، نجی ٹی وی کے مطابق نیب نے دوران تفتیش فریال تالپور سے سوال کیا کہ آپ نے جعلی اکاؤنٹس سے 3کروڑ وصول کرکے اویس مظفر کو دیئے؟ سابق صدر کی ہمشیرہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ گنے کی ادائیگی ہوئی، معلوم نہیں تھا رقم جعلی اکاؤنٹس سے آرہی ہے، نیب کے ایک اور سوال ”گنے کی رقم کس شوگرملز نے اداکی؟ کا جواب دیتے ہوئے فریال تالپور نے کہا کہ رقم عبدالغنی مجید نے دی لیکن یاد نہیں کس شوگرملزسے آئی۔

فریال تالپور کا کہنا تھا کہ زرداری صاحب نے کہا تھا کہ رقم وصول کرلو، فریال تالپور نے زرداری گروپ کے جوائنٹ ونچر سے اظہار لاتعلقی کرتے ہوئے کہا کہ ناصرعبداللہ،یونس قدوائی،حسین لوائی سے کوئی تعلق نہیں،نیب کے سوال ”اویس مظفرنے 3کروڑکیش کرائے تاکہ مشکوک ٹرانزیکشن کی ٹریل توڑی جائے؟“کے جواب میں فریال تالپور نے کہا کہ زرداری گروپ کی دستخط شدہ چیک بکس ابوبکرزرداری کے پاس ہوتی تھیں،اویس مظفرکے نام چیک ابوبکرزرداری نے جاری کیا،انہوں نے کہا کہ پارک لین سٹیٹ پرائیویٹ لمیٹڈسے بھی کوئی تعلق نہیں۔

    متعلقہ خبریں