عالمی میڈیا نے عمران خان کے وزیراعظم بننے کی پیشنگو ئی کر دی

2018 ,جولائی 25



لندن، واشنگٹن، نئی دہلی، دبئی (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں ہونے والے انتخابات پر بین الاقوامی میڈیا کی بھی نظریں جمی ہوئی ہیں اور اس حوالے سے برطانوی اخبار نے عمران خان کے نئے پاکستانی وزیر اعظم بننے کی پیشگوئی کردی۔ پاکستانی عوام آئندہ 5 سال کے لیے اپنے نئے حکمرانوں کا انتخاب کریں گے اس اہم موقع پر دنیا بھر کے میڈیا کی نظریں بھی 25 جولائی کو ہونے والے انتخابات پر جمی ہوئی ہیں۔ امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کے مطابق دہشت گردی اور شریف خاندان کے خلاف کرپشن کیس کے باوجود پاکستان میں پھر انتخابات ہونے جارہے ہیں اور عمران خان ایک نیا پاکستان بنانے کے خواہش مند ہیں۔ ایک اور امریکی اخبار ہفنگٹن پوسٹ کا کہنا ہے کہ ممکنہ طور پر نواز شریف کے جیل جانے سے عمران خان پاکستان کے نئے وزیر اعظم بن سکتے ہیں۔ اسی طرح برطانوی اخبار انڈیپنڈنٹ نے بھی عمران خان کی پاکستان کے اگلے وزیر اعظم بننے کی پیشگوئی کردی ہے۔ گلف نیوز کا کہنا ہے کہ عمران خان، شہباز شریف اور بلاول بھٹو انتخابات میں سیاسی طاقت کی جنگ لڑنے کے لیے تیار ہیں جب کہ بھارتی میڈیا کے مطابق حالیہ سرویز میں عمران خان نے نواز شریف کو عوامی مقبولیت میں پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ دوسری طرف برطانوی اخبار دی گارڈین نے پہلی بار پاکستانی انتخابات میں خواجہ سراں کے حصہ لینے پر خاص رپورٹ شائع کی جب کہ الجزیرہ نے تمام نشستوں سمیت عام انتخابات کی مکمل معلومات کو خبروں کا حصہ بنایا ہے۔ انتخابات دوہزار اٹھارہ سے بھارت بلبلا اٹھا ہے، چاہے کچھ ہوجائے عمران خان اقتدار میں نہ آئے بھارتی میڈیا عمران خان کی جیت کے امکان سے پریشان ہوگیا۔ بھارتی اخبار ٹائمز نا نے پاکستان الیکشنز کے خلاف زہریلا پراپیگنڈا شروع کردیا، صاف کہہ دیا کہ عمران خان کی جیت بھارت کی ہار ہوگی، ٹائمز نا کے مضمون میں واویلا مچایا گیا ہے کہ عمران خان بھارت کے خلاف ہیں۔ بھارتی اخبار انڈیا ٹوڈے میں سرخی لگی کہ عمران خان کی جیت بھارت کیلئے مشکلات پیدا کرے گی۔ بھارتی اخبار دی پرنٹ نے خبر لگائی کہ عمران خان کا وزیراعظم بننا جمہوریت کیلئے بری خبرہوگی۔ جبکہ ایک اور بھارتی اخبارفنانشل ٹائمز نے خبر لگائی کہ عمران خان جمہوریت کے لیے خطرہ ہیں۔ نوازشریف کے بیانیہ کی حمایت میں بھارتی میڈیا کھل کر پراپیگنڈہ کررہا ہے بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ کچھ بھی ہوجائے۔ عمران خان الیکشن میں کامیاب نہ ہوں عمران خان کی ہار سے بھارت کو فائدہ ہوگا۔ عمران خان الیکشن جیت گئے تو بھارت کا نقصان ہوگا۔ عمران جہادی گروپوں کی حمایت کرتے ہیں۔ جیتے سے مسائل پیدا ہوں گے۔ عمران خان بھارت مخالف نظریات رکھتے ہیں اور اپنی تقاریر میں بھارت کیخلاف سخت زبان استعمال کرتے ہیں۔ تجزیاتی رپورٹ کے مطابق تحریک انصاف 110/ مسلم لیگ نواز 60/ پیپلز پارٹی 40/ ایم ایم اے 20/ آزاد 30/ ایم۔کیو ایم 8/ پاک سر زمین 7/ اور دیگر چھوٹی جماعتیں 1/2/3 پر کامیاب ہو سکتی ہیں تحریک انصاف بائیں بازوں کی جماعتوں سے ملکر وفاق میں حکومت بنانے کی پوزیشن میں ہوگی وزیر اعظم کےلئے عمران خان مضبوط امیدوار کے طور پر سامنے ہیں چوہدری نثار علی خان اور شہباز شریف پنجاب کے وزیر اعلی کی دوڑ میں شامل ہوسکتے ہیں تحریک انصاف وفاق میں حکومت تشکیل دیتی ہے تو اس کے مخالف ایک سخت اپوزیشن اتحاد بنے گا یہ اسمبلی بھی چوں چوں کا مربہ اندرونی و بیرونی مسائل کا سخت سامنا پیش اسکتا ہے –

متعلقہ خبریں