مہاتیر محمد کی پاکستان آمد مگر۔۔۔ 26 مارچ کو کونسسی شخصیت پاکستان پہنچ رہی ہے؟ خبر آتے ہی عمران خان خوشی سے نہال ہوگئے

2019 ,مارچ 20



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کے مشن سربراہ ارنیسٹو رمیریز ریگو 26 مارچ کو پاکستان پہنچیں گے۔ارنیسٹو رمیریز ریگو اپنے دورے کے دوران وزیر خزانہ اسد عمر اور اسٹیٹ بینک حکام سے ملاقات کریں گے، حکومت کو آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر ملنےکی امید ہے۔ملاقات میں ٹیکس چوری روکنے اور بجلی کی قیمتوں پر گفتگو ہوگی جبکہ آئی ایم ایف کو کرنٹ اکاؤنٹ اور تجارتی خسارے میں کمی سے بھی آگاہ کیا جائے گا۔عالمی مالیاتی ادارے سے 6 ارب ڈالر ملنے کی امید پر اقتصادی ماہرین نے روپے کی قدر میں کمی اور بجلی و گیس کی قیمتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔وزارت خزانہ کے مطابق بجلی کی قیمتوں میں ایڈجسٹمنٹ اب سہ ماہی بنیادوں پر ہوگی۔ پہلی ایڈجسٹمنٹ رواں ماہ جبکہ دوسری جون میں کی جائے گی۔خیال رہے کہ وزیر خزانہ کے حوالے سے بتایا گیا کہ ’ہمیں کوئی جلدی نہیں‘، یہ اسی بیان کی بازگشت ہے جو انہوں نے آئی ایم ایف سے مشاورت کے آغاز میں دیا تھا کہ اگر اس میں 2 ماہ کی بھی تاخیر ہوتی ہے تو بھی ہم محفوظ ہیں۔وزیر خزانہ نے یہ بات اسلام آباد میں ہونے والی ایک کانفرنس کے دوران کہی، ایک ماہ کی تاخیر کی صورت میں کسی بھی پروگرام کا آغاز جنوری کے اواخر میں ہوگا جبکہ اس سے قبل وہ اشارہ دے چکے ہیں کہ وہ جنوری کے وسط تک آئی ایم ایف پروگرام کے لیے بورڈ کی منظوری چاہتے ہیں۔برطانوی جریدے بلوم برگ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہم اب بھی پروگرام حاصل کرنا چاہتے ہیں لیکن ہمیں اس کے حصول کی کوئی جلدی نہیں، اس سے فنڈنگ کے دیگر مواقع کھلنے کی امید ہے۔واضح رہے کہ 12 ارب ڈالر کے اقتصادی خلا کو پر کرنے کے لیے حکومت کی اولین ترجیح دوست ممالک سے امداد حاصل کرنا ہے، اس ضمن میں سعودی عرب سے گزشتہ ہفتے ایک ارب ڈالر موصول ہوچکے ہیں اس کے علاوہ 3 ارب ڈالر کی رقم اور 3 ارب ڈالر کا تیل تاخیری ادائیگیوں پر فراہم کرنے کا وعدہ بھی کیا گیا تھا۔اس کے ساتھ حکومت چین کے ساتھ بھی بات چیت میں مصروف ہے تاہم اس حوالے سے کوئی اعلان ابھی تک سامنے نہیں آیا، اس بات چیت کا آغاز اس وقت ہوا تھا جب وزیراعظم عمران خان نے چین کا دورہ کیا تھا، دورے پر چینی حکام نے انہیں ’تعاون کے نئے باب‘ کی یقین دہانی کروائی تھی۔

 

متعلقہ خبریں