مولانا فضل الرحمان کی سیاست ختم شُد ، اچانک ایسا قدم اُٹھا لیا گیا کہ اسپتال پہنچے کی وجہ آپ کو بھی سمجھ آجائے گی

2019 ,اپریل 11



راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی احتساب بیورو( نیب) راولپنڈی نے سابق وفاقی وزیر اور جمعیت علمائے اسلام ف کے مرکزی رہنما محمد اکرم خان درانی کے خلاف ایک اور کیس کھول دیا۔نجی ٹی وی کے مطابق نیب راولپنڈی نے سابق وفاقی وزیر اور مولانا فضل الرحمن کے انتہائی قریبی ساتھی محمد اکرم خان درانی کے خلاف بطور وفاقی وزیر ہاؤسنگ مساجد کے پلاٹ الاٹ کرنیکی تحقیقات کا بھی آغاز کردیا ۔اکرم درانی نیب راولپنڈی میں پیش ہوئے جہاں ان سے آمدن سے زائد اثاثہ کیس کے بعد بطور وزیر ہاؤ سنگ مساجد کے پلاٹ الاٹ کرنے کی تحقیقات بھی کی گئیں۔دوسری جانب اکرم درانی نے بھی اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ مجھے مساجد کے پلاٹ الاٹ کرنے پر بلایا گیا۔انہوں نے کہا کہ میں 1990 سے متواتر منتخب ممبر ہوتا آ رہا ہوں اور انتہائی اہم ترین عہدوں پر رہا ہوں ،میں نے بڑی شفاف زندگی گذاری ہے،میں نیب سمیت سب قومی اداروں کا احترام کرتا ہوں ،مجھے نیب والوں نے عزت بھی دی ہے ،اگر نیب نے مجھے دوبارہ بھی بلایا تو ضرور آؤں گا ،مجھے نیب نے کرپشن یا ناجائز اثاثوں پر نہیں مسجدوں پر بلایا ہے،مجھے اگر بلایا ہے تو اپائنٹمنٹ پر بلایا ہے ،یہ میرے لئے عزت کی بات ہے،اللہ کا گھر بنانا عزت کی بات ہے اس میں کوئی رسوائی والی بات نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ جس طرح میں نے وزارت چلائی ہے سب اس کے گواہ ہیں ،مجھے نیب نے اتنی عزت دی ہے کہ میں کیا بتاؤں،اُنہوں نے مجھے چائے بھی پلائی ہے اور بسکٹ بھی کھلائے ہیں،اگر آپ اندر سے صاف ہیں تو پھر ہمیں کسی سے ڈرنا نہیں چاہئے،ہر ایک کے الگ الگ معاملات ہیں ،میں اپوزیشن میں ہوں کسی کے گرفتار ہونے پر خوش نہیں ہو سکتا۔یاد رہے کہ جنرل پرویز مشرف کے دور میں محمد اکرم خان درانی خیبر پختون خوا میں متحدہ مجلس عمل کی حکومت میں بطور وزیر اعلیٰ بھی خدمات سرانجام دیتے رہے ہیں جبکہ ان کا شمار مولانا فضل الرحمن کے بھی انتہائی قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے۔

متعلقہ خبریں