پٹرول مہنگا ہونے پرنئے مشیر خزانہ کا انوکھا جواب ۔۔۔۔ ایسی بات کہہ دی کہ ہر کوئی اسد عمر کو یاد کرنے لگا

2019 ,مئی 3



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ تیل کی قیمت کنٹرول کرنا حکومت کے ہاتھ میں نہیں، آئی ایم ایف کے ساتھ معاملات جلد طے ہو جائیں گے، جس کے بعد صورتحال بہتر ہوجائے گی، نئے بجٹ میں عام آدمی کی فلاح ترجیح ہوگی۔مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا حکومت نے اخراجات کم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے ہیں، محاصل میں اضافے کیلئے مربوطاقدامات کیے جا رہے ہیں، درآمدات اور برآمدات میں توازن لانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا دنیا میں کسی ملک نے تنہا ترقی نہیں کی، دستیاب وسائل سے بھرپور استفادے کیلئے کوشاں ہیں، آئی ایم ایف کیساتھ مذاکرات جاری ہیں۔حفیظ شیخ کا کہنا تھا پی ٹی آئی کے منشور کے مطابق اقتصادی ترقی کیلئے اقدامات کیے جا رہے ہیں، احساس پروگرام کے تحت محروم طبقات کو آگے لایا جائے گا، آنیوالا بجٹ میکرو اکنامک فریم ورک وضع کرے گا، نئے بجٹ میں اخراجات اور آمدنی کے فرق کو کم کرنے کیلئے اقدامات کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا گزشتہ 13 سال میں کسی کمپنی کی نجکاری نہیں ہوئی جبکہ میرے دور میں 34 کمپنیوں کی نجکاری کی، حکومت پر عزم ہے کہ بین الاقوامی تجربات سے فائدہ اٹھائے، یاد رہے کہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں پیٹرول کی قیمت بڑھا کر 108روپے مقرر کرنے کی منظوری دے دی گئی ۔میڈ یا رپورٹس کے مطابق مشیر خزانہ عبد الحفیظ شیخ کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے کی منظوری دی گئی ، اجلاس میں پیٹرول کی قیمت 108روپے مقرر کرنے کی منظوری دی گئی جبکہ ڈیزل 4روپے 89پیسے فی لیٹر مہنگا کرنے کی بھی منظوری دی گئی ہے۔واضح رہے کہ چند روز قبل اوگرا نے پیٹرول 14 روپے 37 پیسے فی لیٹر مہنگا کرنے کی سفارش کی تھی ، اور اب یہ خبر آئی ہے۔

متعلقہ خبریں