کراچی میں سرعام ارشاد رانجھانی کا قتل ، سندھ کی سب سے بڑی شخصیت کو عہدے سے فارغ کردیا گیا ، خبر نے زرداری کو بھی ہلا کررکھ دیا

2019 ,فروری 11



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعلیٰ سندھ نے ارشاد رانجھانی قتل میں ایڈیشنل آئی جی امیر شیخ کو عہدے سے فارغ کر دیا۔محکمہ ایس این جی ڈی اے کو وزیر اعلیٰ کا حکم موصول ہو گیا۔  ارشاد رانجھانی کو 6 فروری بروز بدھ کو بھینس کانونی کے یونین کائونسل چیئرمین رحیم شاہ نے بھرے بازار میں قتل کر دیا اور اس نے متاثرہ زخمی شخص کو اسپتال لے جانے بھی نہیں دیا تھا۔ جس پر وزیراعلی سندھ نے انسپکٹر جنرل پولیس سندھ ڈاکٹر کلیم امام کو کسی سینئر پولیس افسر سے اس قتل کی تحقیقات کرانے کی ہدایت کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے شہر میں اپنی سیاسی عزم کی بدولت امن بحال کیا ہے اور اس میں پولیس، رینجرز اور پاک آرمی نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب حکومت کسی کو بھی ریاست کے اندر ریاست قائم کرنے اور اپنے ہاتھوں میں بندوق اٹھانے کی اجازت نہیں دے سکتی۔ انہوں نے ارشاد رانجھانی کے واقع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی شخص کو ڈاکو قرار دیکر قتل نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ میں شہر میں اس قسم کے واقعات کی اجازت نہیں دے سکتا جوکہ امن کا مرکز اور بین الاقوامی کھیلوں کا حب بننے جا رہا ہو، جہاں پر ہر گزرتے دن کے ساتھ کاروباری سرگرمیوں کو فروغ حاصل ہورہا ہو۔وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے ارشاد رانجھانی کے قتل کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے کیس کی جوڈیشل انکوئری کروانے کا فیصلہ کیا۔ وزیراعلی سندھ نے چیف سیکریٹری سندھ ممتاز علی شاہ کو ہدایت کی کہ وہ رجسٹرار سندھ ہائی کورٹ کو ایک خط لکھیں جس میں ارشاد رانجھانی کے قتل کی جوڈیشل انکوائری کرانے کی درخواست کی جائے۔اس حوالے سے تازہ ترین خبر یہ ہے کہ وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے رانجھانی قتل کیس میں بڑا فیصلہ سناتے ہوئے۔ایڈیشنل آئی جی کراچی امیر شیخ کو فوری طور پر عہدہ چھوڑنے کا حکم دے دیا ہے۔محکمہ ایس این جی ڈی اے کو احکامات موصول ہو چکے ہیں جو ایڈیشنل آئی جی تک پہنچائے جائیں گے۔

متعلقہ خبریں