شادی سے پہلے دولہے کیا سوچ رہے ہوتے ہیں؟ وہ بات جو لڑکیوں کو معلوم نہیں

2019 ,جنوری 5



لاہور(مانیٹرنگ رپورٹ) شادی سے عین پہلے دولہے کے دماغ پر کیا بات سوارہوتی ہے؟ لوگ نجانے اس کے بارے میں کیا کچھ کہتے ہیں، لیکن پہلی بار بہت سے دولہوں نے خود ہی یہ بات کھل کر بتا دی ہے۔ ویب سائٹ ’ریڈٹ‘ پر ایک سوشل میڈیا صارف نے جب یہی سوال پوچھا تو بہت سے لوگوں نے جواب دیا، جن سے آپ کو بھی بخوبی پتا چل جائے گا کہ اس اہم موقع پر دولہے کے ذہن میں کیا چل رہا ہوتا ہے۔

 

    ایک صاحب نے اپنی شادی کے دن کو یاد کرتے ہوئے بتایا ’’بھئی سچی بات یہ ہے کہ میرے ذہن پر تو اخراجات سوار تھے۔ میں سوچ رہا تھا کہ شادی پر خرچہ بہت ہی زیادہ ہو گیاہے۔ دراصل میں تو کبھی بھی اتنا خرچہ نا کرتا لیکن دلہن کا اصرار تھا اور مجھے اس کی ہر بات ماننی پڑی کیونکہ میں اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ بیوی خوش تو زندگی آسان۔جب وہ عروسی جوڑے میں میرے سامنے آئی تو پھر میں نے سوچا کہ اس خوبصورت لمحے کے لئے تو میں 30 گنا زیادہ بھی خرچ کر دیتا تو کم تھا۔ ‘‘ ایک اور شخص نے اپنی شادی کے دن کا احوال کچھ یوں بیان کیا ’’میں بہت جذباتی ہو رہا تھا اور کوشش کر رہا تھا کہ خود پر قابو رکھوں۔ ایک موقع پر تو میری آنکھوں میں آنسو بھی آ گئے تھے اور مجھے یہ پریشانی تھی کہ سب کی نظریں مجھ پر تھیں۔‘‘

    اس دولہے کی بات سن کر آپ یہ نا سمجھئے گا کہ سب دولہے ایسے ہی حساس اور بھلے مانس ہوتے ہیں، مثلاً ان صاحب کو دیکھ لیجئے ’’ میری نظر مہمانوں پر تھی۔ میں دیکھ رہا تھا کہ وہاں بہت سے ایسے لوگ تھے جنہیں میں نے پہلے کبھی نہیں دیکھاتھا اور میں سوچ رہا تھا کہ انہیں کس نے بلا لیا۔ میرا واقعی یہ خیال تھا کہ ان مفت خوروں کو وہاں نہیں ہونا چاہئیے تھا۔ ‘‘

    اور کچھ دولہے تو ایسے بھی ہوتے ہیں جنہیں یقین ہی نہیں آتا کہ واقعی ان کی شادی ہو رہی ہے۔ ایک ایسے ہی دولہے کا کہنا تھا ’’جب میں نے اپنی دلہن کو دیکھا تو میرے منہ سے بے اختیار نکلا ’او مائی گاڈ!‘ مجھے یقین نہیں آ رہا تھا کہ اتنی خوبصورت لڑکی مجھ سے شادی کر رہی تھی۔ وہ دلہن بن کر اتنی خوبصورت لگ رہی تھی کہ میں اپنی آنکھوں پر یقین نہیں کر پا رہا تھا۔ مجھے لگا کہ میں خواب دیکھ رہا ہوں۔ ‘‘

    متعلقہ خبریں