نواز شریف کے رہا ہوتے ہی طاہر القادری بھی میدان میں آگئے، اچانک ایسا قدم اُٹھا لیا کہ (ن) لیگ کے لیے نئی مشکل کھڑی ہوگئی

2019 ,مارچ 27



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک): پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ انصاف کی جدوجہد میں کبھی قانون ہاتھ میں نہیں لیا، ہمیشہ عدالتوں سے انصاف مانگا اورمانگتے رہیں گے،انصاف کیلئے مظلوموں کا ساتھ دینے والے سر خرو ہونگے،مرکزی شوری کا اجلاس 5 اپریل کو طلب کر لیا ۔ تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر طاہر القادری نے پاکستان عوامی تحریک کی مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 14 بے گناہوں کو دن دیہاڑے شہید کیا گیا،قتل و غارت گری کے یہ دلدوز مناظر میڈیا کے کیمروں کی آنکھ کے ذریعے پوری قوم نے دیکھے،یہ خون رائیگاں نہیں جائیگا،انصاف کیلئے مظلوموں کا ساتھ دینے والے سر خرو ہونگے۔ڈاکٹر طاہر القادری نے پاکستان عوامی تحریک کی شوریٰ کا ہنگامی اجلاس 5 اپریل(جمعہ) کو بلا لیا ہے۔ڈاکٹر طاہر القادری نے شوریٰ کے ممبران کو 5اپریل کے اجلاس میں شرکت یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے ۔خیال رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو طویل انتظار کے بعد منگل کو رات گئے کوٹ لکھپت جیل سے رہا کردیا گیا۔ سابق وزیر اعلی اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اپنے بھائی کو لینے جیل کے باہر موجود تھے ۔ رہنماوں اور کارکنوں کی بڑی تعداد نے شاندار استقبال کیا اور مٹھائیاں تقسیم کیں ۔ نواز شریف رہائی کے بعد بڑے قافلے کے ساتھ جاتی امراءپہنچے تو وہاں بھی کارکنوں کی بڑی تعداد ان کی منتظر تھی۔ نواز شریف گاڑی میں ہاتھ ہلا کر کارکنوں کے نعروں کا جواب دیتے اور ان کا شکریہ ادا کرتے رہے ۔ ن لیگ کے قائد کی ضمانت پر رہائی کی خوشی میں بکروں کا صدقہ دیا گیا ۔ نوٹ بھی نچھاور کئے گئے ۔ رکن اسمبلی سیف الملوک کھوکھر اور فیصل سیف الملوک کھوکھر کی قیادت میں ریلی نکالی گئی ۔ واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے کی العزیزیہ ریفرنس میں طبی بنیاروں پر ضمانت کے بعد رہائی کا پروانہ جاری کیا تھا ۔ رجسٹرار سپریم کورٹ کی طرف سے جاری روبکا رمیں کہا گیا تھاکہ نوازشریف کسی اور کیس میں مطلوب نہیں تو انہیں رہا کردیا کر دیا جائے۔ جیل حکام نے فیکس کے ذریعے روبکار موصول ہونے کی تصدیق کی تاہم کہا کہ فیکس سے آئے احکامات میں قانونی پیچیدگیاں ہیں ۔

متعلقہ خبریں