تیل کے ذخائر کا خزانہ۔۔۔ پاکستان سونے کی چڑیا بن گیا معدنی ذخائر کی اطلاعات کے بعد دنیا بھر کی نظریں لگ گئیں

2019 ,مارچ 27



بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان جلد ہی تیل کے ذخائر دریافت کرنے والا ہے جس سے نہ صرف پاکستان کو بلکہ خلیجی ممالک اور چین سمیت تمام جنوبی ایشیائی ممالک کو فائدہ پہنچے گا۔ چینی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق اس بات کا قوی امکان ہے کہ پاکستان کراچی کے سمندر میں جلد ہی تیل کے وسیع ذخائر دریافت کر لے گا۔ اس دریافت کے بعد جنوبی ایشیائی ممالک کے معاشی حالات میں بھی بہتری آنے کا امکان ہے۔چینی میڈیا کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ اگر پاکستان نے تیل کے ذخائر دریافت کر لیے تو اس صورت میں پاکستان کو مزید غیر ملکی سرمایہ کاری کی ضرورت پڑے گی۔ اس حوالے سے کئی غیر ملکی کمپنیاں بھی اپنی دلچسپی کا اظہار کریں گی جبکہ کئی کمپنیاں تیل کے ذخائر کی دریافت ، ان کی کان کنی اور تیل کو ریفائن کرنے میں بھی مدد کی پیشکش کریں گی۔چین بھی پاکستان میں انرجی سیکٹر میں سرمایہ کر رہا ہے۔پاکستان میں تیل کے ذخائر کی دریافت کے بعد چینی کمپنیوں کے مابین سرمایہ کاری کے لیے حوصلہ افزائی پیدا ہو گی۔ یاد رہے کہ پاکستان کی سمندری حدود میں تیل و گیس کے ذخائر دریافت کر لیے گئے، ذرائع کے مطابق امریکی کمپنی ایگزن موبائل 5 ہزار میٹر گہرائی تک ڈرلنگ کرنے میں کامیاب، بنا کسی رکاوٹ کے اتنی گہرائی میں ڈرلنگ کرنا اور پرشر کک ملنے کا مطلب ہے کہ تیل و گیس کے ذخائر دریافت ہوگئے۔زیر سمندر 5 ہزار میٹر کی گہرائی تک ڈرلنگ کرنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ تاہم امریکی کمپنی ایگزن بنا کسی رکاوٹ کے زیر سمندر 5 ہزار میٹر کی گہرائی تک ڈرلنگ کرنے میں کامیاب ہو چکی ہے۔ جبکہ دوران ڈرلنگ پریشر کک بھی حاصل ہوئی۔ جب بھی تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کے سلسلے میں ڈرلنگ کے دوران پریشر کک حاصل ہو، تو اس کا مطلب ہوتا ہے کہ تیل و گیس کے ذخائر دریافت کر لیے گئے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان بھی اس حوالے سے قوم کو خوشخبری سنا چکے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر تیل کے وسیع ذخائر دریافت کر لیے گئے تو اس سے پاکستان سمیت خطے کے دیگر ممالک کو بھی فائدہ ہو گا۔

متعلقہ خبریں