بڑے بڑوں کی چھٹی ۔۔۔ مسلم لیگ (ن) نے اچانک شاہد خاقان عباسی کے بارے میں بڑا فیصلہ کر لیا ، پوری پارٹی فیصلے کے خلاف پھٹ پڑی

2019 ,مئی 3



لاہور (ما نیٹرنگ ڈیسک) ملکی سیاست میں ایک بار پھر بڑی تبدیلی دیکھنے میں آئی ہے شہباز شریف نے وطن واپسی کا فیصلہ موخر کردیا ہے اور لندن میں قیام بڑھانے کا فیصلہ کرلیا ہے جبکہ دوسری جانب نوازشریف بھی لندن جانے کے لیے پر تول رہے ہیں۔ایسے میں ایک بار پھر سے این آر او کی بازگشت سنائی دینے لگی ہے۔ن لیگ کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی نے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین اور پارلیمانی لیڈر تبدیل کرنے کی منظوری دے دی ہے، یہ فیصلہ نواز شریف سے مشاورت کے بعد کیا گیا ،رانا تنویر کو چیئرمین پی اے سی جبکہ خواجہ آصف کو پارلیمانی لیڈر مقرر کیا گیا۔اور اب میڈیا رپورٹس میں بتایا جارہا ہے کہ شاہد خاقان عباسی کو بھی پارٹی کا نائب صدر بنایا جا سکتا ہے۔جبکہ شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ خواجہ آصف متحرک اور سینئر پارلیمنٹیرین شہباز شریف کی خواہش پر پارلیمانی لیڈر بنایا گیا ہے۔جب کہ دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی نے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین اور پارلیمانی لیڈر تبدیل کرنے کی منظوری دے دی ہے. ترجمان مسلم لیگ (ن) نے ایک جاری بیان میں کہا کہ قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے موجودہ حالات میں پارٹی قائد محمد نواز شریف سے مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا تھا، جس پر نواز شریف نے رانا تنویر حسین کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین اور خواجہ آصف کو پارلیمانی لیڈر نامزد کیا. انہوں نے کہاکہ محمد شہباز شریف شروع سے ہی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین بننے کے خواہاں نہیں تھے جبکہ انہوں نے متحدہ اپوزیشن اور پارلیمانی ایڈوئزری گروپ کے اصرار پر پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیئرمین کا عہدہ قبول کیا تھا. ترجمان نے کہا کہ اس وقت کے معروضی حالات کی بنا پہ تمام اپوزیشن جماعتوں اور پارلیمانی ایڈوئزری گروپ کا اصرار تھا کہ قائد حزب اختلاف کو ہی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا سربراہ ہونا چاہیے۔

متعلقہ خبریں