لیگی ارکان اسمبلی کی وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات پر مریم نواز کا انتہائی سخت رد عمل آگیا

2019 ,جون 30



لاہور (مانیٹرنگ رپورٹ) مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے لیگی ارکان اسمبلی کی عمران خان سے ملاقات کو حکومتی کیمپ میں پائی جانے والی مایوسی قرار دے دیا ، انہوں نے واضح کیا کہ وہ اس طریقے سے حکومت کو ریلیف کا راستہ فراہم نہیں کریں گی۔

ٹوئٹر پر مریم نواز لیگی ارکان اسمبلی کی عمران خان سے ملاقات کی خبروں پر اپنے رد عمل میں کہا ہے کہ اس طرح کی بے تکی باتیں جعلی حکومت کے کیمپ میں پائی جانے والی مایوسی اور ہیجان کو ظاہر کرتی ہے۔ ان کی ناکامیوں کو چھپانے کیلئے کسی قسم کا کور فراہم نہیں کریں گے اور آخر میں انہیں مایوسی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ خود پر کی جانے والی تنقید کو خوش دلی سے قبول کرنا ہر کسی کے بس کی بات نہیں ہے، ان لوگوں کے تو بالکل بھی نہیں جن کی ساری حکومت ہی چوری کے مینڈیٹ پر کھڑی ہو۔ایک اور ٹویٹ میں مریم نواز نے کہا کہ اندھے کو بھی نظر آ رہا ہے کہ جعلی اعظم اور اس کی جعلی حکومت خوفزدہ ہیں اور خوف اور گھبراہٹ میں وہ انتقامی کاروائیوں میں تیزی لانے کی بیوقوفانہ مگر ناکام کوششیں کر رہے ہیں۔

انہوں نے اپنے کارکنوں کو پیغام دیا کہ ’ آپ نے نا گبھرانا ہے نا ڈرنا ہے، یہ حرکتیں ان کے اپنے زوال کا باعث ہوں گی ، انشاءاللہ ! شیرو ڈٹ کر مقابلہ کرنا۔‘مریم نواز کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو انشاءاللہ کچھ نہیں ہو گا۔ وہ ناانصافی اور ظلم کا نشانہ بنے ہیں، ان کے ساتھ اللہ اور عوام ہیں۔ اللہ ان کو بہت جلد سرخرو کرے گا۔ فکر ظالم کو ہونی چاہئے کیونکہ ظالم کی پکڑ بہت سخت ہے۔ایک لیگی کارکن نے مریم نواز سے سوال پوچھا کہ انہوں نے میدان عمل میں کام کرنا ہے یا ٹوئٹر پر جدوجہد کرنی ہے۔ جس پر مریم نواز نے کہا کہ دونوں پر ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہے بلکہ جو جہاں کر سکتا ہے۔ ٹوئٹر پر سب سامنے ہوتا ہے، میدان عمل میں کیا کرنا ہے اس کی ٹائمنگ اور تفصیل کو وقت سے پہلے بیان نہیں کیا جا سکتا۔ ’میں اپنے آپ سے اور آپ سب سے وعدہ کر چکی کہ نواز شریف کے لئے میں آخری حد تک جاؤں گی ،انشاءاللہ، دیکھتے رہیے۔‘

    متعلقہ خبریں