ہوا کی رفتار سے بھی تیز ہوائی جہاز منظر عام پر

2018 ,اپریل 12



واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک): پندرہ سو تیرہ کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے پرواز کرنے والا جہاز منظر عام پر آگیا جو بنا کسی شور کے آواز کی رفتار سے بھی تیز فضا میں اڑے گا۔ ’ایکس‘ نامی طیارہ آواز کی رفتار سے بھی تیز اڑے گا جس کا شور انتہائی کم ہو گا، یہ تقریبا سترہ کلومیٹر سے زائد بلندی پر پرواز کرسکے گا، طیارے کے ذریعے پیرس سے نیویارک کا سفر صرف تین گھنٹے میں طے کر لیا جائے گا۔

سُپر سونک (شور کے بغیر) طیارہ امریکی ادارہ لاک ہیڈ مارٹن کے اشتراک سے تیار کیا جارہا ہے جو ایک جدید ترین ماڈل ہے، یہ منصوبہ امریکی خلائی ادارے ناسا کی طرف سے دیا گیا ہے جو سن 2021 تک مکمل کر لیا جائے گا۔امریکی تحقیقاتی ادارے ناسا کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ تیز ترین جہاز میں دوران پرواز صرف اتنی ہی آواز پیدا ہو گی، جتنی کہ کسی گاڑی کا دروازہ بند کرنے سے پیدا ہوتی ہے اور اب اس طرح کے طیارے کو ٹیسٹ کرنے کا وقت آ گیا ہے۔خیال رہے کہ امریکا میں’ایکس طیارے‘ ماضی میں نئی ٹیکنالوجی کے لیے تجرباتی طور پر بھی استعمال کیے جا چکے ہیں لیکن اب اس نئے جہاز کی تیاری کے لیے امریکی صدر کی جانب سے گزشتہ ماہ فنڈز فراہم کیے جاچکے ہیں، اس وقت دنیا کی کئی بڑی کمپنیاں آواز سے بھی تیز طیارے بنانے کے مختلف منصوبوں پر کام کر رہی ہیں۔

متعلقہ خبریں