’’ اس کو دھمکی نہ سمجھا جائے میں یہ کر گزروں گی ۔۔۔۔‘‘ مریم نواز نے خطرناک کام کرنے کا اعلان کر دیا

2019 ,جولائی 8



لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک ) نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز شریف نے بتایا ہے کہ حکومت نے نواز شریف کو جیل میں گھر کا کھانا دینے سے منع کر دیا ہے جس پر مریم نواز نے کہا کہ وہ عدالت سے رجوع کریں گی اور اگر تب بھی کچھ نہ ہوا تو پھر وہ جیل کے سامنے بھوک ہڑتال پر بیٹھیں گی ۔ مریم نواز نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ ”جعلی حکومت نے نواز شریف صاحب کے گھر کے کھانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ کھانا لے جانے والا سٹاف پچھلے 5 گھنٹے سے جیل کے باہر کھڑا ہے۔میاں صاحب نے جیل کا کھانا کھانے سے انکار کر دیا ہے۔ اگر انھوں نے اگلے 24 گھنٹے میں یہ پابندی واپس نا لی تو میں عدالت سے رجوع کروں گی۔“ مریم نواز نے کہا ہے کہ کھانا لے جانے والا سٹاف پچھلے 5 گھنٹے سے جیل کے باہر کھڑا ہے۔ میاں صاحب نے جیل کا کھانا کھانے سے انکار کر دیا ہے۔ مریم نواز نے کہا ہے کہ وہ اس معاملے مین عدالے سے رجوع کریں گی۔انہوں نے اپنے دوسرے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ اگر کھانا لے جانے کی اجازت نہ ملی تو عدالت سے رجوع کریں گی اور اگر تب بھی دادرسی نہ ہوئی تو وہ جیل کے باہر بھوک ہڑتال کریں گی۔ انہوں نے لکھا کہ”عدالت سے بھی مدد نا ملی تو میں کوٹلکھپت جیل کے باہر جا کر بیٹھوں گی۔ بھوک ہڑتال بھی کرنا پڑی تو کروں گی۔ ان ظالموں پر مجھے بھروسہ نہیں ہے۔ یہ میاں صاحب کے کھانے میں کچھ بھی ملا سکتے ہیں۔اس بات کو دھمکی نا سمجھا جائے کیونکہ میں یہ کر گزروں گی۔“ مریم نواز نے دونوں پیغامات دینے کے بعد کہا کہ اس بات کو دھمکی نا سمجھا جائے کیونکہ وہ یہ گزریں گی۔ خیال رہے کہ اس سے پہلے بھی کہا گیا تھا کہ حکومت نے نواز شریف کو گھر کا کھانا دینے سے منع کر دیا ہے لیکن حکومت نے اس بات کی تردید کی تھی اور کہا تھا کہ نواز شریف گھر کا کھانا ہی کھا رہے ہیں اور ساتھ ہی سابق وزیراعظم کو دیے جانے والے کھانے کی فہرست بھی جاری کر دی گئی تھی۔

متعلقہ خبریں