داتا دربار خود کش حملہ کرانے والے پکڑے گئے ۔۔۔ وہ کہاں چھپے بیٹھے تھے ؟ تعلق کس سے ہے ؟ لاہور کے کس علاقے میں سب پلاننگ ہوئی ؟ ہوشربا انکشافات

2019 ,مئی 10



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) سیکیورٹی اداروں نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے داتا دربار خود کش حملے کے چار سہولت کاروں کو گرفتار کرکے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔داتا دربار دھماکے کی تحقیقات میں بڑی پیش رفت سامنے آئی ہے، دونوں سہولت کار گرفتار کرلیے، سکیورٹی اداروں کی گڑھی شاہو مین بازار میں کامیاب کارروائی کے دوران چائے کے اسٹال سے موٹرسائیکل رکشہ ڈرائیور سمیت چار مشتبہ ملزمان پکڑے گئے۔رکشہ ڈرائیور کی نشاندہی پر دونوں سہولت کاروں تک رسائی ملی۔ ملزمان دھماکے کی صبح سوا چھے بجے داتا دربارمیں دیکھے گئے۔ سیاہ شلوار قمیض پہنے ایک سہولت کار نے سلیپر، دوسرے نے چپل پہن رکھے تھے۔ بمبار نے بھی کالے کپڑے پہن رکھے تھے، دھماکے کا زخمی مدثر دم توڑ گیا، شہیدوں کی تعداد بارہ ہوگئی۔یاد رہے کہ لاہور میں داتا درباردھماکے کا ایک اور زخمی مدثر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے میواسپتال میں زیرعلاج زخمی دم توڑ گیا، جس کے بعد مرنے والوں کی تعداد بارہ ہوگئی ہے۔ اندرون لوہاری گیٹ کا رہائشی انیس سالہ مدثر بدھ کو دھماکے میں شدید زخمی ہوا تھا، لاش ورثا کے حوالے کردی گئی ہے، یاد رہے اس سے قبل بھی یہ ایک خبر آئی تھی کہ لاہورمیں داتا درباردھماکےکاایک اورزخمی مدثر زخموں کی تاب نہ لاتےہوئےمیواسپتال میں دم توڑگیا، جس کے بعد مرنے والوں کی تعداد بارہ ہوگئی ہے۔داتا درباردھماکے کے بعد لاہور کی فضا تیسرے روز بھی سوگوار ہے ، میواسپتال میں زیرعلاج ایک اورزخمی چل بسا، اندرون لوہاری گیٹ کا رہائشی انیس سالہ مدثر بدھ کو دھماکے میں شدید زخمی ہوا تھا، لاش ورثا کے حوالے کردی گئی ہے۔دھماکے کے شہداء کی تعداد بارہ ہوگئی جبکہ پچیس زخمی ابھی بھی میئو اسپتال میں زیرعلاج ہیں سانحہ لاہور کے بعد پنجاب کے مختلف شہروں میں پولیس کاسرچ آپریشن جاری ہے، پاکپتن میں چالیس مشکوک افراد کوحراست میں لے لیا ہے جبکہ درباربابا فرید کی سیکورٹی بھی بڑھا دی گئی ہے۔

متعلقہ خبریں