وزیراعظم عمران خان واقعی تبدیلی لے آئے ، غربت کے خاتمے کیلئے اب تک کا شاندار قدم اٹھا لیا

2019 ,مارچ 12



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق نے کہا ہے کہ غربت ختم کرنے کیلئے نئی وزارت بنائیں گے، غربت کے خاتمے کیلئے تاریخی اقدامات کررہے ہیں، رواں سال نیا بلدیاتی نظام لا رہے ہیں، نئے بلدیاتی نظام میں تحصیل کی سطح پر مالی اختیارات دیں گے۔ انہوں نے آج یہاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں غربت کا خاتمہ ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ غربت کے خاتمے کیلئے تاریخی اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ حکومت غربت کو ختم کرنے کیلئے نئی وزارت متعارف کروائے گی۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال کے آخر تک نیا بلدیاتی نظام لا رہے ہیں۔ نئے بلدیاتی نظام میں تحصیل کی سطح پر مالی اختیارات دیں گے۔ اب ایم این ایز کو پیسے نہیں دیے جائیں گے۔ ارکان قومی اسمبلی کے حلقوں کی علاقائی اسکیموں کی تفصیلات اکٹھی کی جارہی ہیں۔ نعیم الحق نے کہا کہ نوازشریف کی بیماری اور علاج کے ایشو کوسیاسی طور پر اجاگر کرنے کی کوشش افسوسناک ہے۔ نوازشریف کو تمام طبی سہولیات فراہم کررہے ہیں۔ ان کو علاج کیلئے جو سہولیات چاہئیں وہ سب پاکستان میں پوری ہوسکتی ہیں۔ وزیراعظم نے بھی انہیں بہترین طبی سہولیات دینے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو کی قومی اسمبلی میں انگریزی والی تقریر نہیں سن پایا۔ تاہم بلاول بھٹو نےقومی اسمبلی میں اپنی تقریر میں ذاتی حملے کیے تھے۔ جس پر اسد عمر نے صرف بلاول بھٹو کی جارحانہ تقریرکا جواب دیا۔ لاول نواز ملاقات عیادت کیلئے نہیں بلکہ سیاسی تھی۔انہوں نے کہا کہ نواز کی علالت الگ مسئلہ ہے اور سیاست الگ مسئلہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذاتیات کی سیاست سے بچنے کیلئے وزیر اعظم نے اخلاقیات کمیٹی کے قیام کیلے سپیکر کو ہدایت کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ اخلاقیات کمیٹی بن چکی ہے جس میں حکومت اور اپوزیشن کے اراکین شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف نہیں چاہتی کہ ذاتیات کی سیاست سے قومی اسمبلی کا ایوان سرکس بنے۔ انہوں نے کہا کہ چوہدری برادران سے اچھے تعلقات ہیں اور وہ ہم سے ناراض نہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی کابینہ میں توسیع ہوگی سب کو مد نظر رکھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ میری سربراہی قائم کمیٹی سکیموں کا جائزہ لیکر منظوری دے گی۔انہوں نے کہا کہ صرف حکومتی ارکان کے حلقوں کی سکیموں کی منظوری دے گی۔ انہوںنے کہا کہ فنڈز محدود ہیں اپوزیشن کی سکیموں کیلئے فنڈز نہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ تاثر غلط ہے کہ حکومتی اراکین کیلئے خزانے کے منہ کھول دئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی اراکین کو اپنے حلقوں کی سکیمیں تجویز کرنے کیلئے کہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ غربت کے خاتمہ کیلئے الگ وزارت بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ نئی وزارت میں بی آئی ایس پی، بیت المال سمیت تمام غربت سے متعلق پروگراموں کو شامل کیا جائے۔

متعلقہ خبریں