’’غریب عوام کی سن لی گئی‘‘ تیل بھی فری گیس بھی فری ۔۔۔ بالاخر بڑا اعلان ہوگیا

2019 ,اپریل 25



اسلام آباد (مانیتڑنگ ڈیسک) ایران نے پاکستان کو بنا پیسوں کے تیل، گیس اور بجلی فراہم کرنے کی پیش کش کردی، ایرانی صدر کا کہنا ہے کہ پاکستان کے ساتھ تجارتی سرگرمیاں بڑھانے، تیل، گیس اور بجلی فراہم کرنے کے خواہش مند ہیں، چاہتے ہیں پیسوں میں تجارت کی بجائے اشیاء کی لین دین کی جائے۔ تفصیلات کے مطابق ایرانی صدر نے پاکستان کو تیل، گیس اور بجلی فراہم کرنے کی پیش کش کی ہے۔ ایران صدر حسن روحانی کا کہنا ہے کہ ایرانی حکومت پاکستان کی تیل اور گیس کی ضرورت پوری کرنے کیلئے تیار ہے اور اس ضمن میں پاکستانی سرحد کے ساتھ پائپ لائن کی تعمیر کیلئے ضروری اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ ایران پاکستان کیلئے بجلی کی برآمدات 10 گنا تک بڑھانے کیلئے تیار ہے۔ کوشش ہے کہ دونوں ممالک کی ضروریات کے پیش نظر اشیاء اور دیگر چیزوں کا تبادلہ کیا جاسکے۔ دونوں ممالک کی تجارت بنا پیشے کے کرنے کے خواہش مند ہیں۔ ایرانی صدر نے پاکستان کے ساتھ تجارتی تعلقات کو مضبوط بنانے کیلئے گوادر اور چا بہار بندرگاہ کے درمیان لنک قائم کرنے میں بھی دلچسپی کا اظہار بھی کیا ہے ۔ جبکہ دوسری جانب حکومت نے پاک ایران گیس پائپ لائن کی تکمیل کے حوالے سے اہم اعلان کردیا، پاکستان منصوبے کی تکمیل کا خواہاں ہے، تاہم امریکی پابندیاں منصوبے پر اثرانداز ہوئی ہیں، ایران ہمسایہ ملک ہے، تاہم ہمیں اپنے مفادات دیکھنا ہوں گے۔ تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کے دورہ ایران کے بعد پاک ایران گیس پائپ لائن کی تکمیل کے حوالے سے اہم اعلان کیا گیا ہے۔اس حوالے سے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خصوصی بیان جاری کیا ہے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستان پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبے کی تکمیل کا خواہش مند ہے، تاہم امریکی پابندیاں اس منصوبے پر اثرانداز ہوتی ہیں۔ امریکی پابندیاں پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبے کی تکمیل کی راہ میں رکاوٹ ہیں۔وزیر خارجہ کا مزید کہنا ہے کہ ایران پاکستان کا ہمسایہ ہے، تاہم پاکستان کو اپنے مفادات عزیز ہیں۔کچھ قوتیں پاک ایران تعلقات میں کشیدگی چاہتی ہیں، ہماری بدقسمتی ہے کہ ہم ماضی سے نکل نہیں رہے۔ انہوں نے کہا کہ پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ مناسب منصوبہ ہے تاہم امریکا نے ایران پر پابندیاں لگا رکھی ہیں ، ان حالات میں ایران کے ساتھ مالی معاملات آگے بڑھانا آسان نہیں۔ واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان کے دورہ ایران کے دوران ایرانی صدر حسن روحانی نے پاکستان کے ساتھ تجارتی سرگرمیاں بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔جبکہ ایرانی صدر حسن روحانی نے پاکستان کی توانائی کی ضروریات پوری کرنے کیلئے تیل و گیس فراہم کرنے کی پیش کش بھی کی تھی۔ ایرانی صدر نے اعلان کیا تھا کہ پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبے کے تحت ایران پاکستان کی سرحد تک اپنے حصے کی پائپ لائن تعمیر کر چکا ہے۔

متعلقہ خبریں