مجھے وزیر اعظم کیوں بنانا چاہتے ہیں؟؟ شاہ محمود قریشی نے پہلی بار خاموشی توڑ دی، پوری پارٹی کو بڑا سرپرائز دے ڈالا

2019 ,جون 8



ملتان (مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ وہ وزارت عظمیٰ کے امیدوار نہیں۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن مہنگائی کے خلاف احتجاج کرنا چاہتی ہے لیکن دیکھنا یہ ہے کہ کیا مہنگائی آٹھ ماہ کی کوتاہیوں کا نتیجہ ہے یا پھر دس سال کی کی کارگردگی کا نتیجہ ہے۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن ایسا کام نہ کرے جو ملکی مفاد میں نہ ہوا۔اور اللہ نہ کرے اس میں کوئی جانی نقصان ہو جاتا ہے تو اس کا ذمہ دار کون ہو گا۔اس لیے انہیں ماضی سے سبق سیکھنا چاہئیے۔ملک کے وزیراعظم عمران خان ہیں اور ان کی ذات پر ہم سب اور حلیف جماعتیں متفق ہیں جب میں وزارت عظمیٰ کا امیدوار ہی نہیں تو مجھے کیوں بنانا چاہتے ہیں؟۔ملتان میں میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے انہوںنے مزیدکہاکہ کیا افراتفری کی سیاست سے معیشت مضبوط ہوگی ،ماضی کے تجربات کومدنظرکھتے ہوئے سبق سیکھنا چاہیے اورایسا کام نہیں کرناچاہیے ۔جونہ ملک کے مفادمیں ہوں نہ جمہوریت کے مفاد میں ہونہ معیشت کے مفاد میں اورنہ ہی ان کے اپنے مفادمیں ہو،اگرافراتفری پھیلتی ہے اوراس میںکوئی جانی نقصان ہوتاہے توکون ذمہ دارہوگا۔اگرآپ کے کسی چوک میں بیٹھ کراحتجاج کرنے سے مہنگائی کاعلاج ہوسکتاہے تو ضرورکریں ۔سوال یہ ہے کہ جس مالی مشکلات سے ہم دوچارہیں اس کے محرکات کیاہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کا موقف کیاہے وہ کہہ رہی ہے ہم نے آواز اٹھانی ہے مہنگائی کے خلاف۔منہگائی کا ذمہ دار کون ہے کیا یہ آٹھ ماہ کا تسلسل ہے یا گزشتہ دس سال کا۔وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ملک میں جاری مہنگائی کی موجو دہ لہر گزشتہ حکومتوں کا تسلسل ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوںنے کہاکہ دفاعی بجٹ آئی ایم ایف کی وجہ سے کم نہیں کیاجارہا،آپ نے آئی ایس پی آرکابیان پڑھاہے بلکہ فوج نے از خود کہاہے کہ ملک ایک مشکل وقت سے دوچار ہے اوراس مشکل وقت میں ہم نہیں چاہتے کہ جومالی خسارہ بڑھاہواہے اورہرطبقہ اپناحصہ ملارہاہے ہم رضاکارانہ طورپر یہ اصرارنہیں کریں گے کہ افراط زرکوسامنے رکھتے ہوئے کہ ہمارے بجٹ میں اضافہ کیاجائے۔ملک ایک مشکل وقت سے دو چار ہے۔ملک میں احتجاج ہوگا تو سرمایہ کاری کیسے ہوگی اپوزیشن کے بھی مفادات پاکستان سے ہیں۔ احتجاج سے افراتفری پھیلنے سے نقصان ہوگا۔ اپوزیشن احتجاج سے جمہوریت کو کمزور کرے گی۔

متعلقہ خبریں