بانو قدسیہ مرحومہ کی 90 ویں سالگرہ ،داستاں سرائے میں تقریب کا اہتمام ،اہم ادبی شخصیات کی شرکت

2018 ,نومبر 28



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)اردو ادب کی بے مثال مصنفہ، مشہور و معروف  ناول نگار ،ڈرامہ رائٹر  آپا بانو قدسیہ(مرحومہ) چاہنے والوں نے ملک بھر میں ان کی 90 ویں سالگرہ منائی جبکہ مرحومہ بانو قدسیہ کے اہل خانہ نے بھی ان کی سالگرہ کا اہتمام کیا اور ’’ داستاں سرائے‘‘ میں کیک کاٹا گیا،تقریب میں ادب سے وابستہ مشہور و معروف شخصیات اور قریبی رشتہ داروں نے شرکت کی ۔  ناول کو نئی جہت، نیاانداز اور نئے زاویئے عطا کرنے والی مشرقی روایات کی امین بانو قدسیہ مرحومہ کے چاہنے والوں نے ان  کی 90 ویں سالگرہ منائی اور مختلف مقامات پر کیک کاٹے گئے اور ان کی ادبی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا گیا ۔لاہور میں ان کے صاحبزادے اثیر احمد  نے بھی ’’داستاں سرائے‘‘ میں اپنی والدہ کی سالگرہ کا اہتمام کیا اور کیک کاٹا  ۔داستاں سرائے میں منعقدہ بانو قدسیہ مرحومہ کی 90 ویں سالگرہ تقریب میںادب سے وابستہ مشہور و معروف شخصیات اور قریبی رشتہ داروں نے شرکت کی جن میں ریاض محمود،افتخار افی،ڈاکٹر عارف،قدوسی احمد،شکیل چوہان،عشرت شمیم، سمیرا،سادیہ،سیدہ سمین،و دیگر افراد نے شرکت کی۔اس موقع پر بانو قدسیہ کے صاحبزادے  اثیر احمد نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بانو قدسیہ ادب کے حوالے سے ملک کا بڑا سرمایہ تھا،اور آج اس تقریب میں ادب سے وابستہ افراد کی شرکت نے تقریب کو عزت بخشی ہے۔یاد رہے کہ بانو قدسیہ مشرقی پنجاب کے ضلع فیروزپور میں 28 نومبر ،1928ء کو ایک زمیندارگھرانے میں پیدا ہوئیں ۔ انہوں نے کنیئرڈ کالج برائے خواتین لاہور سے ریاضیات اور اقتصادیات میں گریجویشن کیا اور1951ء میں گورنمنٹ کالج لاہور سے ایم اے اردو کی ڈگری حاصل کی،اردوادب کے ساتھ شروع سے لگاؤتھا۔مشہور افسانہ نگار اور ڈرامہ نویس اشفاق احمد سے رشتہ ازدواج میں منسلک ہونے کے بعد ان کی معاونت سے ادبی پرچہ ’’داستان گو ‘‘جاری کیا۔بانو قدسیہ نے اردو اور پنجابی زبانوں میں ریڈیو اور ٹیلی ویژن کے لیے بہت سے ڈرامے بھی لکھے، اُن کے ایک ڈرامے ’’آدھی بات‘‘ کو کلاسک کا درجہ حاصل ہے۔بانو قدسیہ کے افسانوی مجموعوں میں ناقابل ذکر، بازگشت، امر بیل، دست بستہ، سامان وجود، توجہ کی طالب، آتش زیرپااور کچھ اور نہیں کے نام شامل ہیں۔ان کا ناول ’’راجہ گدھ‘‘ اردو زبان کے اہم ناولوں میں شمار ہوتا ہے،جبکہ دیگر تصانیف میں ایک دن، شہر لازوال، پروا،موم کی گلیاں،چہار چمن، دوسرا دروازہ، ہجرتوں کے درمیاں اور ان کی خود نوشت راہ رواں سر فہرست ہیں۔

متعلقہ خبریں