شاہد لطیف کا بیگوں پر پلاسٹک چڑھانے کا ٹھیکہ خطرے میں پڑ گیا، جہانگیر ترین بھی میدان میں آگئے

2019 ,جولائی 21



اسلام آباد (مانیٹرنگ رپورٹ) ایئر پورٹس پر مسافروں کے سامان کی پلاسٹک ریپنگ کو لازمی قرار دیے جانے اور ریٹائرڈ ایئر مارشل شاہد لطیف کی کمپنی کو ٹھیکہ دینے کے معاملے کی تحریک انصاف کے مرکزی رہنما جہانگیر ترین نے مخالفت کردی۔ جہانگیر ترین نے سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے بیگوں کی پلاسٹک ریپنگ کے عمل کو لازمی قرار دیے جانے کا نوٹیفکیشن شیئر کرتے ہوئے اسے غیر منطقی قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ مسافروں کو اس بات پر مجبور کرنا کہ اپنے سامان کی پلاسٹک ریپنگ کرائیں مناسب نہیں ہے، یہ حق لوگوں کے اپنے پاس ہونا چاہیے کہ وہ سامان کی پیکنگ کرانا چاہتے ہیں یا نہیں۔ جہانگیر ترین نے مطالبہ کیا کہ سی اے اے کی جانب سے جاری ہونے والا نوٹیفکیشن جتنی جلدی ممکن ہوسکے واپس لیا جانا چاہیے۔

    خیال رہے کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے ایک نوٹیفکیشن کے ذریعے مسافروں کو پابند کیا گیا تھا کہ وہ ایئر پورٹس پر اپنے سامان کی پلاسٹک ریپنگ ضرور کرائیں، سی اے اے نے ریپنگ کا ریٹ 50 روپے فی بیگ مقرر کرتے ہوئے ریٹائرڈ ایئر مارشل و دفاعی تجزیہ کار شاہد لطیف کی کمپنی کو اس کا ٹھیکہ دیا تھا۔

    متعلقہ خبریں