بھارتی گیدڑ بھپکیوں کے بعد پاک فضائیہ کے سربراہ ایئرچیف مارشل مجاہد انور خان بھی میدان میں آگئے ، ایسا اعلان کردیا کہ پاکستانیوں کا خون جوش مارنے لگا

2019 ,فروری 24



اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک ) پاک فضائیہ کے سربراہ ایئرچیف مارشل مجاہد انور خان کا کہنا ہے کہ ہم ایک امن پسند قوم ہیں پاک فضائیہ دیگر مسلح افواج کے شانہ بشانہ اپنی آپریشنل تیاریوں اور مکمل ہم آہنگی کی وجہ سے ہر قسم کے چیلنجز سے نبرد آزما ہونے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ پاکستان ایئرفورس کے سربراہ ایئر چیف مارشل مجاہد انور خان نے پاک فضائیہ کے فارورڈ آپریٹنگ بیسز کا دورہ کیا ، فارورڈ آپریٹنگ بیسز پر تعینات پاک فضائیہ کے عملے سے گفتگو میں ایئر چیف کا کہنا تھا کہ ہم ایک امن پسند قوم ہیں لیکن اگر ہم پر جنگ مسلط کی گئی تو ہم ہر قیمت پر اپنی فضائی سرحدوں کی حفاظت کو یقینی بنائیں گے ، انہوں نے کہا کہ پاک فضائیہ دیگر مسلح افواج کے شانہ بشانہ اپنی آپریشنل تیاریوں اور مکمل ہم آہنگی کی وجہ سے ہر قسم کے چیلنجز سے نبرد آزما ہونے کی صلاحیت رکھتی ہے ، ان کا کہنا تھا کہ پاک فضائیہ قومی امنگوں کے عین مطابق دشمن کی کسی بھی قسم کی جارحیت کا بھر پور قوت سے جواب دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہے ، ترجمان نے بتایا کہ ایئر چیف نے فضائی اڈوں کی آپریشنل تیاریوں پر اطمینان کا اظہار کیا اور عملے کے جذبے اور پیشہ وارانہ مہارت کو سراہا ، یاد رہے کہ 14 فروری کو پلوامہ میں انڈین نیم فوجی دستے سی آر پی ایف پر شدت پسندوں کے حملے کے بعد انڈیا میں پاکستان مخالف جذبات عروج پر ہیں ، پورا انڈیا صدمے میں ہے اور سیاسی حلقوں میں پاکستان کو سبق سکھانے کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ حکمران پارٹی سے تعلق رکھنے والے سیاستدانوں کے بیانات بالکل ویسے ہی ہیں جیسے کسی بڑے شدت پسند حملے کے بعد سننے میں آتے رہے ہیں ، انڈیا میں بہنے والے خون کے ایک ایک قطرے کا حساب لے کر پاکستان کو سبق سکھانے کی قسمیں کھائی جا رہی ہیں۔ وہیں حزب اختلاف کے قائدین ملک کے جذبات اور سیاسی اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے حکومت کے ساتھ کھڑے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔ آل پارٹی میٹنگ میں تمام جماعتوں نے اتفاق رائے سے حکومت کو یہ چھوٹ دی کہ پاکستان کو سبق سکھانے کے لیے جو بھی قدم اٹھائیں جائیں گے انھیں حزب اختلاف کی حمایت حاصل ہوگی ، اوڑی فوجی کیمپ پر شدت پسند حملے میں 19 فوجی ہلاک ہوئے تھے اور 11 دن کے بعد انڈین فوج نے مبینہ طور پر لائن آف کنٹرول میں داخل ہو کر پاکستانی شدت پسندوں کے ٹھکانوں کو تباہ کیا تھا جسے سرجیکل سٹرائیک کا نام دیا گیا اور مودی حکومت کے بقول پاکستان کو سبق سکھانے کا وعدہ نبھایا گیا۔ غاصب بھارتی فوج پر کارخودکش حملے کے فوراً بعد بھارت نے بغیر کسی تحقیقات کے پاکستان پر الزام تراشی کا سلسلہ شروع کررکھا ہے ، دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات میں کشیدگی آگئی ہے اور بھارتی میڈیا مسلسل جنگ کی باتیں کررہا ہے۔

متعلقہ خبریں