کل پرویز مشرف کی وطن واپسی ؟؟؟ پکی خبر نے پورے ملک میں ہلچل مچا دی

2019 ,مئی 1



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پرویز مشرف نے پاکستان واپس آنے سے انکار کردیا، سابق صدر نے موقف اختیار کیا ہے کہ شدید بیماری کے باعث دبئی میں زیر علاج ہوں، پاکستان کا سفر نہیں کر سکتا، 2 مئی کی سماعت ملتوی کی جائے۔ تفصیلات کے مطابق سابق صدر مملکت اور آرمی چیف پرویز مشرف نے ایک مرتبہ پھر عدالت میں پیش ہونے اور پاکستان واپس آنے سے انکار کر دیا ہے۔سابق صدر پرویز مشرف نے موقف اختیار کیا ہے کہ شدید بیماری کے باعث دبئی میں زیر علاج ہوں۔ میری عمر 76 سال ہے جبکہ بیمار بھی ہوں ایس لیےپاکستان کا سفر نہیں کر سکتا۔ عدالت سے درخواست ہے کہ 2 مئی کی سماعت ملتوی کی جائے۔اس سے پہلے خبر آئی تھی کہ پرویز مشرف کے وکیل نے کہا ہے کہ سابق صدر یکم مئی کو پاکستان واپس آ رہے ہیں۔اس حوالے سے میڈیا پر کافی بحث ہو رہی تھی کہ کیا واقعی پرویز مشرف وطن واپس آئیں گے یا نہیں۔البتی اب ان کے خاندانی ذرائع نے واضح طور پر ان خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پرویز مشرف کے ذاتی معالج نے انہیں اسی ملک میں علاجکروانے کا مشورہ دیا ہے اور اگر پرویز مشرف ایک ملک سے دوسرے ملک جانا چاہیں تو انہیں ائیر ایمبولینس کی ضرورت پرے گی۔ان کے طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ وہ لمبا سفر نہیں کر سکتے ورنہ ان کی جان کو خطرہ ہو سکتا ہے۔یاد رہے کہ پرویز مشرف پر سنگین غداری کے مقدمات چل رہے ہیں، جن میں وہ مطلوب ہیں۔ تاہم پچھلے دور حکومت میں انہیں علاج کی غرض سے بیرونِ ملک جانے کی اجازت دی گئی تھی جس کے بعد سے وہ ابھی تک واپس نہیں آئے اور اب خاندانی ذرائع کے اس بیان کے بعد ان کی واپسی کے امکانات مزید کم لگ رہے ہیں۔ جبکہ دوسری جانب عدالت حکومت سے انہیں واپس لانے کا حکم دے چکی ہے۔

متعلقہ خبریں