ہیئر ڈریسرز اور بیوٹی پارلرز کی بھی شامت ۔۔۔ تبدیلی والوں نے کارروائی ڈال دی

2019 ,جولائی 14



راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب بھر میں ہیئر ڈریسرز اور بیوٹی پارلرز کی رجسٹریشن ولازمی لائسنسنگ کی مہلت 31جولائی کوختم ہو جائے گی جس کے بعد غیر رجسٹرڈ ہیئر ڈریسرز اور بیوٹی سیلونز کے خلاف راولپنڈی سمیت پنجاب بھر میں کارروائی کا آغاز کر دیاجائے ۔محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر پنجاب کے حکام نے اے پی پی کو بتایاکہ محکمہ نے ہیپاٹائٹس بی ،سی ،ایچ آئی وی ایڈز و دیگر موذی امراض سے بچائو کے لیے ھیپاٹائٹس اینڈ انفیکشن کنٹرول پروگرام کے تحت پنجاب بھر میں ہیئر ڈریسرز اور بیوٹی پارلرز کو 31جولائی 2019تک رجسٹریشن اور لائسنسنگ کی ڈیڈ لائن دی ہے اور خبردار کیا ہے کہ یکم اگست سے غیر رجسٹرڈ ہیئر ڈریسرز اور بیوٹی پارلرز کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی کا آغاز کر دیا جائے گا۔طبی ماہرین نے قومی خبر ایجنسی کو بتایاکہ ہیئر ڈریسنگ شاپس و بیوٹی پارلرز کی جانب سے احتیاطی تدابیر اختیار نہ کرنے کی وجہ سے یہ مقامات ہیپاٹائٹس بی ،سی و دیگر موذی امراض کے پھیلائو کا بڑا ذریعہ ہیں ۔دوسری جانب محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر پنجاب نے سرکاری خبر رساں ادارے کو بتایاکہ محکمہ نے رجسٹریشن کے لیے قبل ازیں 30جون کی ڈیڈ لائن دی تھی جسے بڑھا کر 31جولائی کر دیا گیا ہے اور ہیئر ڈریسرز و بیوٹی پارلرز مالکان کو خبردار کیا ہے کہ وہ تمام ملازمین کی ہیپاٹائٹس بی سی اور ایڈز سے بچائو کے لیے سکریننگ اور ویکسینیشن کروائیں ،ہر نئے گاہک کے لیے نئے بلیڈ کا استعمال یقینی بنائیں ،سٹیلائزرز کا استعمال کیا جائے اور وضع کردہ طریقہ کار کے مطابق ہر نئے ملازم کی رجسٹریشن کروائی جائے۔

متعلقہ خبریں