سب پوشیدہ رازکھل گئے: پاکستان کی دبنگ خاتون سیاستدان بڑے شکنجے میں پھنس گئیں، پورے ملک میں تہلکہ مچا دینے والی خبر

2019 ,مارچ 25



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) تحقیقات میں پتا چلا ہے کہ ایان علی کے ساتھ بیرون ملکی دورے کرنے والا شخص پیپلز پارٹی کی سینیٹر رخسانہ بنگش نے تعینات کروایا تھامشتاق نامی شخص نے منی لانڈرنگ کیس میں ملوث ماڈل ایان علی کے ہمراہ 45 غیر ملکی دورے کیے۔ انھیں ائیرپورٹ پر پروٹوکول بھی دلوایا جاتا تھا۔ ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ رخسانہ بنگش نے مشتاق نامی شخص کو ایوان صدر میں پروٹوکول افسر تعینات کروایا تھا۔ مشتاق نامی شخص کی تعیناتی سینیٹر رخسانہ بنگش کے لیٹر پیڈ پر کی گئی۔ نیب نے رخسانہ بنگش کا خط بھی حاصل کر لیا ہے، قومی احتساب بیورو (نیب) نے رہنما پیپلز پارٹی رخسانہ بنگش کو بھی جعلی اکاؤنٹس کیس میں شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے، دوسری جانب خبر یہ ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور سابق وزیر اعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نےجعلی اکاؤنٹس کیس میں ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست دائر کردی، اسلام آباد ہائی کورٹ کا ڈویژنل بینچ منگل کو درخواست پر سماعت کرے گا، واضح رہے کہ قائم علی شاہ کو قومی احتساب بیورو(نیب) نے 27 مارچ کو طلب کر رکھا ہے، درخواست میں قائم علی شاہ کا کہنا تھا کہ تحقیقاتی ٹیم کے سامنے نیب حکام انہیں ممکنہ طور پر گرفتار کرلیں گے اس لیے ضمانت قبل از گرفتاری دی جائے، خیال رہے کہ سابق وزیر اعلیٰ سندھ کا نام کیس کی تحقیقات کرنے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی رپورٹ میں سامنے آیا تھا، وہ ان 172 افراد میں سے ایک ہیں جن کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کی تجویز دی گئی تھی، سینیئر سیاستدان نے اپنی درخواست میں کہا ہے کہ انہیں اس کیس کے ذریعے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے، انہوں نے دعویٰ کیا کہ انہیں اس کیس میں بغیر کسی ٹھوس شواہد کے، گھسیٹا جارہا ہے، اور اب یہ خبر آئی ہے ۔

متعلقہ خبریں