اس آدمی نے 40 سال لگا کر ایسا کارنامہ سر انجام دے دیا کہ۔۔۔ تفصیلات جانئیے اس خبر میں

2018 ,اگست 8



نئی دلی(مانیٹرنگ رپورٹ) پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے خیبر پختونخواہ میں ایک ارب درخت لگانے کے قابل تحسین منصوبے کا اعلان کیا جو ماحولیاتی تحفظ کے لئے ان کے احساس اور لگاﺅ کا آئینہ دار ہے۔ اگرچہ فطرت کے بارے میں ایسا احساس رکھنے والے کم لوگ پائے جاتے ہیں البتہ بھارتی شہری یادیو پائنگ ضرور ایک ایسی ہی مثال ہیں جو نباتاتی حیات سے محبت کرنے والوں کے لئے ایک اور شاندار مثال ہیں۔ گزشتہ 40 سال سے یہ صاحب بلاناغہ نئے پودے لگا رہے ہیں اور ان کی اس غیر معمولی اور حیرت انگیز کاوش نے ایک ویران جزیرے کو ہرے بھرے جنگل میں بدل دیا ہے۔ یہ اتنا بڑا جنگل ہے کہ اس میں درجنوں شیر، گینڈے، 115 سے زائد ہاتھی اور بے شمار دوسرے جانور رہ رہے ہیں۔

ریاست آسام سے تعلق رکھنے والے 56 سالہ یادیوکا گزشتہ 40 سال سے یہ معمول ہے کہ وہ علی الصبح کشتی میں اپنی سائیکل اور باغبانی کے اوزار رکھ کر مجولی جزیرے پر جا پہنچتے ہیں اور سارا دن وہاں پودے لگانے اور درختوں کی دیکھ بھال میں گزارتے ہیں۔ دریائے برہم پترا میں واقع یہ جزیرہ دنیا کا سب سے بڑا دریائی جزیرہ ہے۔ یادیو اس جزیرے پر اب تک 1360 ایکڑ پر محیط جنگل لگا چکے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ وہ جب تک زندہ ہیں اپنا کام جاری رکھیں گے۔

یادیو نے ایک حالیہ انٹرویو میں بتایا کہ یہ 1979ءکی بات ہے، جب وہ 16 سال کے تھے، کہ ان کے علاقے میں شدید سیلاب آیا اور پہلی بار انہیں اندازہ ہوا کہ زمین کا کٹاﺅ روکنے اور سیلاب جیسی قدرتی آفات سے محفوظ رہنے کے لئے درخت کتنے ضروری ہیں۔ انہوں نے عہد کیا کہ وہ ہر روز کم از کم ایک نیا پودا لگائیں گے اور 40 سال ہو گئے کہ وہ اپنے عہد پر قائم ہیں۔ اب ان کے ہاتھ سے لگایا ہوا جنگل 1360 ایکڑ پر پھیل چکا ہے اور وہ اسے مزید ہزاروں ایکڑ تک پھیلانا چاہتے ہیں۔ اس جنگل میں بنگالی ٹائیگر، گینڈے، 115 ہاتھی اور دیگر کئی طرح کے جانور پائے جاتے ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ یادیو اور ان کے جنگل کا میڈیا میں پہلی بار چرچا 2007ءمیں ہوا حالانکہ وہ چار دہائیوں سے یہ کام کر رہے تھے۔ ایک مقامی اخباری فوٹوگرافر جیتو کلیتا نایاب پرندوں کی تصاویر بنانے کیلئے کشتی کے ذریعے دریائے برہم پترا میں واقع جزیرے پر گئے تھے لیکن وہاں وسیع و عریض جنگل اور اس کی دیکھ بھال کرنے والے یادیو کو دیکھ کر وہ بہت حیران ہوئے۔ انہوں نے پہلی بار یادیو کا انٹرویو کیا اور ان کے جنگل کے بارے میں اپنے اخبار میں ایک مضمون لکھا۔ بعد ازاں یہ مضمون عالمی میڈیا میں بھی شائع ہوا اور اب یادیو کو ایک دنیا "Forest Man" کے نام سے جانتی ہے۔ ان کے بارے میں اسی نام سے بنائی ایک ڈاکومینٹری کو یوٹیوب پر اب تک لاکھوں بار دیکھا جا چکا ہے۔

متعلقہ خبریں