’’ یہی وجہ ہے کہ ہماری فوج ۔۔۔۔‘‘ پاک فوج میں سینئر افسران کو سزائے موت، شاہد آفریدی بھی میدان میں آگئے، بڑی بات کہہ دی

2019 ,مئی 30



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ) قومی ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی کا کہناہے کہ انہیں کڑا احتساب کرنے پر پاک فوج پر فخر ہے۔سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ” احتساب کے معاملے اپنے آپ کو سب سے آگے رکھنے پر پاک فوج پر فخر ہے،اپنے سینئر افسران کو جاسوسی کے الزامات پر سزائے موت اور قید کی سزا سنانا مشکل لیکن جراتمندانہ فیصلہ ہے،یہی وجہ ہے کہ ہماری فوج مضبوط ہے“۔



یاد رہے کہ آئی ایس پی آر کے مطابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے 2 آرمی اور ایک سویلین افسر کی سزا کی توثیق کردی، تینوں افسران کو جاسوسی کے الزام میں سزائیں دی گئیں۔ آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ ان افسران میں لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال کو 14سال کی قیدسزاسنائی گئی جبکہ بریگیڈیئر (ر) راجا رضوان کو سزائے موت کی سز اسنائی گئی، ایک سویلین افسر ڈاکٹر وسیم اکرم کو بھی سزائے موت کی سزا سنائی گئی، فوج کے دونوں افسران غیرملکی خفیہ ایجنسیوں کو معلومات دے رہے تھے،آرمی چیف نے 2 آرمی اور ایک سویلین افسرکو راز افشاں کرنے پر سزائیں سنائیں، فوجی افسران کا کورٹ مارشل مکمل ہونے کے بعد سزائے سنائی گئیں،ان تمام افسران پرقومی سکیورٹی کے راز افشاں کرنے پر آفیشل سیکرٹ ایکٹ اور آرمی ایکٹ کے تحت مقدمات چلائے گئے تھے۔واضح رہے گزشتہ 2 سال میں مختلف رینک کے 400 افسران کو سزائیں دی گئیں جس میں این ایل سی سکینڈل میں لیفٹیننٹ جنرل (ر) محمد افضل کو دی گئی،این ایل سی سکینڈل میں میجرجنرل (ر) خالد زاہد اختر کو بھی سزائیں ہوئیں، دونوں افسران پراین ایل سی کے4.3ارب سٹاک مارکیٹ میں لگانےکا الزام ہے،متعدد افسران کو نوکریوں سے فارغ ہونا پڑا۔ لیفٹیننٹ جنرل(ر) اسد درانی کا احتساب بھی اسی پالیسی کے تحت عمل میں آیا۔ لیفٹیننٹ جنرل (ر) اسد درانی کیخلاف ”را“ کے سابق سربراہ اے ایس دلت کے ساتھ ملکر کتاب لکھنے کا الزام ہے۔

متعلقہ خبریں