پوری قوم کشمکش میں۔۔۔ پرویز مشرف کے انتقال کی خبریں، آل پاکستان مسلم لیگ نے اصل خبر بریک کر دی

2019 ,مئی 30



دبئی (مانیٹرنگ ڈیسک ) سابق صدرپرویز مشرف کی جماعت آل پاکستان مسلم لیگ نے پرویز مشرف کی بیماری کے حوالے سے تمام خبروں کی تردید کر دی۔ اے پی ایم ایل نے کہا ہے کہ پرویز مشرف بالکل ٹھیک ہیں۔بتایا گیا ہے کہ ان کے بارے میں گمراہ کن خبریں پھیلائی جا رہی ہیں اور انکا دبئی میں علاج چل رہا ہے۔ تمام خیرخواہوں سے سابق صدر کی صحت کے لیے دعا کی بھی اپیل کی گئی ہے۔اس سے پہلے کہا گیا تھا کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کی طبیعت اچانک بگڑ گئی ہے۔بتایا گیا تھا کہ طبیعت بگڑنے پر سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کو دبئی امریکن اسپتال میں داخل کروا دیا گیاہے۔ ذرائع نے بتایاتھا کہ ڈاکٹرز نے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کو بات چیت کرنے اور ملاقاتیں کرنے سے بھی روک دیا ہے۔واضح رہے کہ جنوری کے مہینے میں سابق صدر پرویز مشرف کی طبیعت بگڑ گئی تھی ،حالت تشویشناک ہونے پر انہیں فوری طور پر دبئی کے پرائیویٹ اسپتال میں منتقل کیا گیا تھا۔سابق صدر پاکستان پرویز مشرف کو سانس لینے میں دشواری کا سامنا تھا۔ تب بھی ڈاکٹرز نے سانس لینے میں دشواری کے باعث سابق صدر کو بات چیت کرنے سے بھی روک دیا تھا۔ یاد رہے کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کو سنگین غداری کیس میں طلب کیا گیا تھا جس کے بعد امکان ظاہر کیا گیا کہ سابق صدر یکم مئی کو پاکستان آئیں گے لیکن بعد ازاں ان کے خاندانی ذرائع نے ان کے پاکستان لوٹنے کی خبروں کی تردید کر دی۔جس کے بعد پرویز مشرف نے بھی پاکستان واپس آنے سے انکار کردیا تھا۔ سابق صدر پرویز مشرف نے مؤقف اختیار کیا کہ میں شدید بیماری کے باعث دبئیمیں زیر علاج ہوں۔ میری عمر 76 سال ہے جبکہ بیمار بھی ہوں ایس لیے پاکستان کا سفر نہیں کر سکتا۔ عدالت سے درخواست ہے کہ 2 مئی کی سماعت ملتوی کی جائے۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ وہ لمبا سفر نہیں کر سکتے ورنہ ان کی جان کو خطرہ ہو سکتا ہے۔ یاد رہے کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف پر سنگین غداریکے مقدمات چل رہے ہیں جن میں وہ مطلوب ہیں۔ تاہم گذشتہ دور حکومت میں سابق صدر کو علاج کی غرض سے بیرونِ ملک جانے کی اجازت دی گئی تھی جس کے بعد سے وہ عدالت کی جانب سے بارہا طلب کیے جانے کے باوجود تاحال وطن واپس نہیں آئے۔

 

متعلقہ خبریں