ججوں کا احتساب ۔۔۔۔ حکومت نے اپنا واضح فیصلہ سنا دیا

2019 ,مئی 30



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ عدلیہ ہو یا کوئی بھی ادارہ احتساب سب کے لیے ہے، کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر احتساب کا شکنجہ کسا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ احتساب کا شکنجہ سب کے لیے یکساں ہے، اداروں میں بیٹھے افراد کو قانون کی پاسداری کرنی ہے، ہمیں کسی بھی تحریک سے کوئی پریشانی نہیں ہے، منی لانڈرنگ اور کرپشن کا حساب تو دینا ہوگا۔فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ صبح سے دیکھ رہے ہیں قیدی کو خراج تحسین پیش کیا جارہا ہے، آج بہت اہم لطیفہ گوئی صبح سے مختلف چینلز پر چل رہی ہے اس لطیفہ گوئی کا مرکز عدلیہ کا وقار ہے، عوام اب قیدی نمبر 420 کے قریب آنے والے نہیں ہیں، بھول جاتے ہیں کہ وہ سپریم کورٹ پر حملہ کرنے والے ہیں، توہین عدالت کا جو ریکارڈ ہے وہ کسی اور جماعت کے حصے میں نہیں آیا۔معاون خصوصی برائے اطلاعات نے کہا کہ ن لیگ نے توہین عدالت نوٹس کی شکل میں گولڈ میڈل جیتے ہیں، آج ہمیں بتایا جارہا ہے کہ عدالتوں کا احترام واجب ہے، وہ بتا رہے ہیں جو عدالتوں کا احترام اپنے موڈ کے مطابق کرتے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان کی راہ میں کوئی رکاوٹ ہے تو وہ عمران خان ہے، اس سے پہلے تو کوئی روکنے والا نہیں تھا مک مکا تھا، 5 سال تمہاری باری اور پھر 5 سال ہماری باری کا مک مکا تھا، پہلی بار حساب دینا پڑ رہا ہے، ہمیں آپ کی تکلیف کا احساس ہے۔ واضح رہے کہ معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ عدلیہ ہو یا کوئی بھی ادارہ احتساب سب کے لیے ہے، کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر احتساب کا شکنجہ کسا جائے گا

متعلقہ خبریں