وہ دن آگیا جس کا سب کو انتظارتھا : 10 تاریخ فائنل، کیا ہونے جا رہا ہے ؟ سانحہ کرائسٹ چرچ کے ملزم کے حوالے سے بڑا اعلان کر دیا گیا

2019 ,اپریل 8



ولنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن کا کہنا ہے کہ کرائسٹ چرچ مساجد پر دہشت گردی کے واقعے پر بننے والا رائل کمیشن 10 دسمبر کو اپنی رپورٹ حکومت کو پیش کرے گا، جس کے بعد ملزم کے حوالے سے فیصلہ کیا جائے گا، اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ 77 لاکھ ڈالر کی کثیر رقم سے ہونے والی انکوائری میں دہشت گرد کی تمام سرگرمیوں، سوشل میڈیا کے استعمال اور بین الاقوامی تعلقات کا جائزہ لیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ کمیشن انسداد دہشت گردی کے لیے ناکافی ذرائع کے بارے میں بھی انکوائری کرے گا۔اس کے علاوہ ان کا کہنا تھا کہ کمیشن انسداد دہشت گردی محکمہ کے ’نامناسب‘ ترجیحات کا بھی معائنہ کرے گا۔سپریم کورٹ کے موجودہ جسٹس سر ولیم ینگ اس تحقیقات کی سربراہی کر رہے ہیں جو سیکیورٹی ایجنسیز کی کارروائیوں پر بھی تحقیقات کرے گا جن کے ہوتے ہوئے یہ حملہ ہوا اور کس طرح دہشت گرد برینٹن ٹیرنٹ نے ہتھیار اور اسلحہ لائسنس حاصل کیا۔خیال رہے کہ وزیراعظم نیوزی لینڈ کی جانب سے رائل کمیشن دہشت گردی کے واقعے کے 10 روز بعد قائم کردیا گیا تھا۔جیسنڈا آرڈرن نے واضح کیا کہ رائل کمیشن حملوں کے بعد ملکی ردعمل کو دیکھتے ہوئے ایسی تجاویز بھی مرتب کرے گا تاکہ دوبارہ ایسا کوئی واقعہ رونما نہ ہو۔نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں 17 مارچ کو 2 مساجد النور مسجد اور لین ووڈ میں دہشت گرد نے اس وقت داخل ہوکر فائرنگ کی تھی جب بڑی تعداد میں نمازی، نمازِ جمعہ کی ادائیگی کے لیے مسجد میں موجود تھے۔نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا تھا کہ اس افسوسناک واقعے میں 49 افراد جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہوئے، انہوں نے حملے کو دہشت گردی قرار دیا تھا۔مسجد میں فائرنگ کرنے والے دہشت گرد نے حملے کی لائیو ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر نشر کی،

متعلقہ خبریں