عمران خان نے اس چیز کی منظوری دے دی جسکی وہ خود مخالفت کرتے تھے، (ن) لیگ بھی سوچ میں پڑ گئی

2019 ,اپریل 8



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیرِ خزانہ اسد عمر نے وزیراعظم عمران خان کو ایمنسٹی سکیم پر بریفنگ دی ہے جس کے بعد وزیراعظم نے ایمنسٹی سکیم کی منظوری دے دی ہے۔ منگل کے روز کابینہ کو ایمنسٹی سکیم پر اعتماد مین لیا جائے گا جس کے بعد 15اپریل کو ایمنسٹی سکیم صدرتی آرڈیننس کے ذریعے نافذ کی جائے گی۔ اس سکیم کا مقصد ملکی صنعتی شعبے کو ترقی دینا ہے۔حکومت چاہتی ہے کہ ملکی صنعتی شعبہ اور برآمدات ترقی کرے اور اس مقصد کیلئے ایمنسٹی سکیم بنائی گئی تا کہ کالا دھن صنعتی شعبے میں استعمال ہو کیونکہ حکومت نہیں چاہتی کہ کالا دھن صنعتی شعبے کی بجائے ریئل اسٹیٹ سیکٹر میں لگایا جائے۔ایف پی سی سی آئی نے اپنے ممبران سے تجاویز طلب کی گئی تھیں جوکہ حکومت کو ارسال کر دی گئیں تھیں۔یاد رہے کہ پاکستان مسلم لیگ ن کی آخری حکومت نے بھی ایک ایمنسٹی سکیم متعارف کرائی تھی جس کا مقصد لوگوں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کیلئے حوصلہ افزائی کرنا تھا لیکن بورڈ آف ریونیو اس مد میں صرف ایک ارب بیس کروڑ روپے ہی اکٹھے کرسکا تھا۔وزیر خزانہ اسد عمرنے کہا ہے کہ حکومت اثاثوں کی ڈیکلیئریشن کیلئے ایمنسٹی سکیم متعارف کرا رہی ہے جس کا مقصد اثاثے ظاہرنہ کرنے والے لوگوں کو ایک موقع فراہم کرنا ہے، ایف بی آر کی استعدادکار بہت بہتر ہو گئی ہے اور مجوزہ سکیم سے استفادہ نہ کرنے والے لوگوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ ڈیجیٹل فنانس کے تحت اداروں کی استعداد کار بہتر بنائی جا رہی ہے، ایف بی آر کی استعداد کار بہت بہتر ہو گئی ہے، ان کے پاس معلومات بھی آ رہی ہیں۔وزیر خزانہ نے کہا کہ جن لوگوں نے اپنے اثاثے ظاہر نہیں کئے ہیں وہ انہیں آگاہ کرنا چاہتے ہیں کہ اب وہ فوری طور پر اپنے اثاثے ظاہر کریں کیونکہ اگر اثاثے ظاہر نہ کئے گئے تو ایف بی آر اور معاون اداروں کے پاس موجود ڈیٹا کو بروئے کار لاتے ہوئے اثاثے ظاہر نہ کرنے والے افراد کے خلاف کارروائی ہو گی۔

متعلقہ خبریں